سمیع ابراہیم کو چپیڑ مارنے کے بعد فوادچوہدری بھی بول پڑے، عارف بھٹی کوبھی کھری کھری سنادیں 

سمیع ابراہیم کو چپیڑ مارنے کے بعد فوادچوہدری بھی بول پڑے، عارف بھٹی کوبھی ...
سمیع ابراہیم کو چپیڑ مارنے کے بعد فوادچوہدری بھی بول پڑے، عارف بھٹی کوبھی کھری کھری سنادیں 

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) فیصل آباد میں ایک شادی کی تقریب کے دوران وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی فوادچوہدری نے مبینہ طورپر سینئر اینکر پرسن سمیع ابراہیم کو تھپڑدے مارا، اس سے قبل دونوں کے درمیان سوشل میڈیا پر توتکار ہورہی تھی لیکن اب تھپڑپڑنے کے بعد عارف حمید بھٹی سمیع ابراہیم کے حق میں آگے آئے توفوادچوہدری نے انہیں بھی کھری کھری سنادیں ۔ 

عارف حمید بھٹی نے ٹوءٹر پر لکھا کہ ’’طمانچہ سمیع ابراہیم کے چہرے پر نہیں ،پاکستان کی صحافت اور جمہوریت کے منہ پر ہے ۔ صحافی اور صحافی یونین، پریس کلب اس آمرانہ عمل پر احتجاج کرتے ہیں ۔ فواد چودھری کو سزا دینا ہوگی ۔ آمریت کا مقابلہ کرنے والے صحافیوں کو دبایا نہیں جا سکتا‘‘ ۔ 

عارف حمید بھٹی کے اس ٹوئیٹ پر فوادحسین چوہدری نے لکھا کہ ’’آپ کو غصہ صرف امیر anchors کیلئے کیوں آتا ہے جب عابد راہی جیسے سیلف میڈ غریب صحافیوں کو سمیع ابراہیم جیسے مافیاز تنخواہیں نہیں دیتے ،اس وقت آپ کی صحافت خطرے میں کیوں نہیں آتی? دراصل صحافت کو خطرہ زرد صحافیوں سے ہے اور زرد صحافت کیخلاف مہم چلانا ہو گی‘‘ ۔ 

فوادچوہدری کی اس ٹوئیٹ پر انیہا چوہدری نے لکھا کہ ’’آپ کی حکومت نے بول چینل اور اے آروائے کے صحافیوں کو سرپر چڑھایا، اب بھگتو ۔ ۔ ۔ ‘ 

رائے وحید کھرل نے لکھا کہ ’’چوہدری صاحب، یہ وہی صحافی ہیں جو تبدیلی سرکارکی پانچ سال تک ترجمانی کرتے رہے ہیں ?; اب بات تھپڑوں اور کردارکشی تک پہنچ گئی، صحافیوں نے اپنا قبلہ درست کرلیا یا اب آپ کو ان صحافیوں کی ضرورت نہیں رہی?

 

مزید : قومی