ہیٹ سٹروک سے بچنے کیلئے کونسی احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئے ؟ ڈاکٹر کاشف الرحمان کے انتہائی مفید مشور ے

ہیٹ سٹروک سے بچنے کیلئے کونسی احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئے ؟ ڈاکٹر کاشف ...
ہیٹ سٹروک سے بچنے کیلئے کونسی احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئے ؟ ڈاکٹر کاشف الرحمان کے انتہائی مفید مشور ے

  


لاہور (خرم رفیق) منہاج یونیورسٹی کے ڈیپارٹمنٹ آف بائیو کیمسٹری اینڈ میڈیکل لیب ٹیکنالوجی کے ہیڈ ڈاکٹر کاشف الرحمان نے کہاہے کہ اس وقت شدید گرم موسم میں پاکستان کے زیادہ تر علاقے ہیٹ ویو کی لپیٹ میں ہیں ، اس لئے تیز دھوپ میں لو سے بچنے کیلئے گھرسے نکلنے سے گریز کرناچاہئے ، خاص کر بوڑھوں اور بچوں کو بہت زیادہ اختیاط کی ضرورت ہے ، اس لئے مناسب احتیاطی تدابیر اختیار کرنی چاہئے ۔

تفصیلات کے مطابق ”روز نامہ پاکستان“ سے گفتگوکرتے ہوئے ڈاکٹر کاشف الرحمان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں موسم گرما بہت شدید ہوتاہے ، مئی اور جون کا شمار سال کے گرم ترین مہینوں میں ہوتا ، اس وقت بھی شدید گرمی کے باعث پاکستان کے زیادہ تر علاقے ہیٹ ویو کی لپیٹ میں ہیں جس کی وجہ سے ہیٹ سٹروک کا خطرہ بڑھ جاتاہے، اس لئے ہیٹ سٹروک سے بچنے کیلئے ضروری ہے کہ تیز دھوپ اور لو میں گھر سے نکلنے سے گریز کیا جائے، باہر نکلنے کی صورت میں سر کو ڈھانپ کر رکھنا چاہئے ، ہوسکے تو سر پر گیلا کپڑا رکھنا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ ہیٹ سٹروک کا زیادہ شکار بوڑھے اوربچے ہوتے ہیں کیونکہ ان کی قوت مدافعت بہت کم ہوتی ہے ، اس لئے ضروری ہے کہ زیادہ عمر کے افراد اور بچوں کوموسم کی شدت سے خصوصی طور پر بچایا جائے ۔

ڈاکٹر کاشف الرحمان نے کہا کہ ہیٹ سٹروک ایک مہلک بیماری ہے جس کی وجہ سے انسانی جسم میں ڈی ہائیڈریشن کا عمل شروع ہوجاتاہے ، اگر بروقت توجہ اور علاج نہ شروع کیا جائے تو ہیٹ سٹروک کا شکار انسان قومے میں بھی جاسکتاہے اور بعدازاں موت بھی واقع ہوسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر کوئی ہیٹ سٹروک کا شکار ہوجائے تو اس کو ٹھنڈی اور سایہ دار جگہ پر رکھنا چاہئے ، ہسپتال کی ایمر جنسی تک پہنچانے کا اہتمام کرنا چاہئے ۔ ان کا کہنا تھا کہ مریض کے جسم پر ٹھنڈے پانی کی پٹیاں رکھنی چاہئے اور جہاں تک ہوسکے ، اس کو مائع جوسز کا استعمال کروایا جائے ۔ ڈاکٹر اشفاق نے بتایا کہ ہیٹ سٹروک کے مریض کو مصنوعی جوسز پلانے سے احتراز کیا جائے کیونکہ ان کے نتائج بہتر نہیں ہوتے ، مختلف کمپنیوں کے بنائے گئے جوسز کی بجائے مریض کو فریش جوسز کا استعمال کروانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ تربوز ہیٹ سٹروک کے مریض کیلئے بہت فائدہ مند ہوتاہے ، اس لئے ضروری ہے کہ مریض کو تربوز کا زیادہ سے زیادہ استعمال کرایا جائے ۔ڈاکٹر اشفاق الرحمان کا کہنا تھا کہ گرمی چونکہ ہر سال ہی آتی ہے اور ہیٹ ویو کی لہر بھی گرمی کے ساتھ لازم و ملزوم ہے ، اس لئے ہیٹ سٹروک سے خوفزدہ ہونے کی ضرورت نہیں بلکہ احتیاط اور مناسب تدابیر اختیار کرنے سے اس مرض سے مکمل طور پر بچاﺅ یقینی بنایا جا سکتا ہے ۔

مزید : تعلیم و صحت