2کروڑ ماسک برآمد کرنے کا الزام، ایف آئی اے نے ڈاکٹر ظفر مرزا کو کلین چٹ دیدی

2کروڑ ماسک برآمد کرنے کا الزام، ایف آئی اے نے ڈاکٹر ظفر مرزا کو کلین چٹ دیدی

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے) نے چین کو دو کروڑ ماسک برآمد کرنے کے معاملہ پر معاون خصوصی ڈاکٹر ظفر مرزا کو بری الزمہ قرار دیدیا ہے اوراس سلسلے میں ینگ فارماسسٹ ایسوسی ایشن ثبوت پیش نہیں کر سکی۔ انکوائری کمیٹی نے تحقیقات روکنے کی استدعا بھی کر دی۔ایف آئی اے نے پاکستان ینگ فارماسسٹ ایسوسی ایشن کی جانب سے 25 فروری کو بھجوائی گئی درخواست پر مکمل چھان بین کے بعد اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ معاون خصوصی ظفر مرزا کا ماسک برآمد کرنے کیلئے پرمٹ کے اجرا سے تعلق ثابت نہیں ہوا، درخواست گزار اپنے الزام بارے کوئی شواہد پیش نہیں کر سکا۔ ڈریپ نے 30 جنوری کو حفاظتی اشیا کی برآمد پر پابندی لگائی تھی۔ ڈریپ نے ماسک برآمد کرنے کیلئے چینی کمپنیوں کو پرمٹ جاری کئے اور ماسک برآمد کرنے کی اجازت قواعد وضوابط کے تحت دی۔ یاد رہے نیب نے بھی معاملہ کی انکوائری شروع کرنے کی منظوری دی ہوئی ہے۔ادھر ترجمان وزارت صحت نے کہاہے کہ ڈاکٹر ظفر مرزا کے حوالے سے ایف آئی اے رپورٹ حق اور سچ کی فتح ہے۔ ایک بیان میں ترجمان وزارت صحت نے کہاکہ ایف آئی اے کی رپورٹ میں سچ کا بول بالا ہوا ہے۔ کسی بھی الزام سے مرعوب ہوے بغیر عوام کی خدمت اور فلاح وبہبود کیلئے وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں کام جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے ہمیشہ شفافیت اور ایمانداری سے عوام کی خدمت کی ہے،الزامات کی تحقیقات اور احتساب کیلئے ہر وقت تیار ہیں۔

ظفر مرزا

مزید :

صفحہ اول -