بجٹ عوام، کسان اور تاجر دشمن، 60فیصد ان ڈائریکٹ ٹیکس لگا دیا گیا، پیپلز پارٹی

بجٹ عوام، کسان اور تاجر دشمن، 60فیصد ان ڈائریکٹ ٹیکس لگا دیا گیا، پیپلز پارٹی

  

اسلام آباد (این این آئی) پیپلزپارٹی نے کہا ہے کہ موجودہ بجٹ عوام دشمن،صنعت دشمن،روزگار دشمن جبکہ کورونا وائرس اورٹڈی دل دوست بجٹ ہے۔ 450ارب روپے کے پٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس لگا دئیے گئے ہیں،جس سے غریب براہ راست متاثر ہوگا،فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز،پیرامیڈیکل سٹاف کیلئے بجٹ میں کچھ نہیں رکھا گیا،این ایف سی ایوارڈ کی خلاف ورزی کرکے صوبوں کے حصے سے11فیصد کٹ لگایا گیا،تو صوبے کس طرح کورونا وائرس اور ٹڈی دل کا مقابلہ کریں گے۔ان خیالات کا اظہار پیپلزپارٹی کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر نفیسہ شاہ،ترجمان چیئرمین بلاول بھٹو زرداری مصطفی نواز کھوکھر،ایم این اے طارق شاہ اور سینیٹر روبینہ خالد نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا،نزیر ڈھوکی بھی ان کے ہمراہ تھے۔ڈاکٹر نفیسہ شاہ نے کہا کہ پاکستان اس وقت طوفان کے درمیان ہے اور تحریک انصاف کی حکومت وبا بن کر عوام پر مسلط ہے،اس وقت روایتی بجٹ کی ضرورت نہیں تھی موجودہ حالات میں عوامی بجٹ پیش کرنا چاہئے تھا۔ انہوں نے کہاکہ بجٹ ایسا آتا کہ عوام کے زخموں پر مرہم ہوتا،اگر نان سلیکٹڈ حکومت ہوتی تو عوام کے فائدے میں بجٹ آتا،اس لئے یہ بجٹ عوام دشمن،صنعت دشمن،کسان دشمن،تاجر دشمن ہے اور صرف کورونا اور ٹڈی دل دوست بجٹ پیش کیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کورونا وائرس کے پیچھے چھپ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے 1.2کھرب مارچ اپریل اور مئی میں گھر بیٹھی کورونا سے متاثرہ عوام پر خرچ کرنا تھا،جس میں سے280ارب روپے خرچ کئے گئے،باقی رقم کہاں ہے؟۔نفیسہ شاہ نے کہا کہ حکومت نے معیشت کی بہتری کیلئے کوئی پیکج نہیں دیا۔صوبوں کو جو فنڈز دئیے گئے ہیں ان کے اعداد وشمار ہی غلط ہیں۔ ورلڈ بینک بتا رہا ہے کہ مارچ میں پاکستان جنوبی ایشیاء کا مہنگا ترین ملک ہوگا۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت کے پچاس لاکھ گھر اور ایک کروڑ نوکریوں کا وعدہ کہاں گیا۔ ممبر قومی اسمبلی طارق شاہ نے کہا کہ حکومت عوام کو ریلیف دینے کی بجائے مزید مشکلات کھڑی کر رہی ہے۔سینیٹر روبینہ خالد نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے خیبرپختونخوا میں آل پارٹی کانفرنس بلائی،جس میں فیصلہ کیا گیا کہ اب زیادہ نہیں چلے گا،اس حکومت نے جو وفاق میں بجٹ دیا اسی طرح ہی صوبے کو بجٹ دے گی،لہٰذا ان سے اچھے کی امید نہیں ہے۔

پیپلز پارٹی

مزید :

صفحہ آخر -