حکومت نے مشکل حالات میں متوازن بجٹ پیش کیا: ذوالفقار خان

  حکومت نے مشکل حالات میں متوازن بجٹ پیش کیا: ذوالفقار خان

  

لاہور(این این آئی)پاکستان ٹیکس فورم کے چیئرمین ذوالفقار خان نے کہا ہے کہ حکومت نے کورونا سے پیدا شدہ مشکل صورتحال کے باوجود متوازن بجٹ پیش کیا اورکئی شعبوں کو سہارا دینے کی کوشش کی ہے، ٹیکس میں ای آڈٹ اور ریفنڈ نظام کو بہتری کی طرف لے جانا مثبت قدم ہے، اخراجات کے مقابلے میں آمدن زیادہ ہو تو ہی عوام کو ریلیف دیا جا سکتا ہے،47سالوں میں آمدن اور اخراجات میں توازن نہیں ہو سکا، آج بھی تمام ٹیکسز کا خاتمہ کرکے حکومت صرف ایک پر چیز ٹیکس سے 13ہزار ارب سے زیادہ آمدن اکٹھی کرسکتی ہے۔ ٹیکس ممبران سے ویڈیو لنک کے ذریعے آئندہ مالی سال کے بجٹ پر مذاکرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت کو تاجر وں اور صنعتکاروں کابھر پور ساتھ دینا چاہیے کیونکہ یہی معیشت کو چلاتے ہیں۔کورونا وباء سے پہلے قرضوں اور سود کی ادائیگیاں کی جارہی تھیں اور حکومتی آمدن بھی بہتر ہورہی تھی مگر لاک ڈاؤن نے ہر شعبے کو پیچھے دھکیل دیا ہے۔ ایسے حالات میں حکومت دونوں طبقوں کو ریلیف دے اور ان کے قرضوں اور سود کی ادائیگیاں کم از کم ایک سال کے لئے موخر کی جائیں۔ا نہوں نے کہاکہ اگر حکومت درست سمت اپنا لے تو 4963 ارب کا ریونیو ہدف کچھ بھی نہیں،3437 ارب کا بجٹ خسارہ لمحہ فکریہ ہے، اگر پہلے اصلاحات کی جاتیں توبجٹ کا حجم 7295 ارب اور آمدن کا حجم 6716 ارب ہونا تھا۔

حکومت آج بھی معیشت کو دستاویزی کرکے اورتما م ٹیکسز کا خاتمہ کر کے صرف پرچیز ٹیکس سے اپنی سوچ سے زیادہ آمدن اکٹھی کر سکتی ہے۔

مزید :

کامرس -