80سالہ قلی جس نے ورکرز کا سامان مفت اٹھانا شروع کردیا، انسانی ہمدردی کی نئی مثال قائم

80سالہ قلی جس نے ورکرز کا سامان مفت اٹھانا شروع کردیا، انسانی ہمدردی کی نئی ...
80سالہ قلی جس نے ورکرز کا سامان مفت اٹھانا شروع کردیا، انسانی ہمدردی کی نئی مثال قائم

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کی وباءکے ان دنوں میں ہر شخص اپنی بساط کے مطابق اس موذی سے نمٹنے اور دوسروں کی مدد کرنے کی سعی کر رہا ہے۔ ایسے میں انسانی ہمدردی کی کچھ ایسی کہانیاں سامنے آ رہی ہیں کہ سن کر انسانیت پر ایمان تازہ ہو جائے۔ ایسی ہی ایک کہانی بھارتی شہر لکھنو¿ سے سامنے آئی ہے جہاں ایک 80سالہ قلی اس طرح کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں اپنا حصہ ڈال رہا ہے کہ وہ دیگر شہروں سے آنے جانے ورکرز کا سامان مفت میں اٹھا رہا ہے۔

انڈیا ٹائمز کے مطابق اس بزرگ کا نام مجیب اللہ ہے جو اس عمر میں بھی روزانہ 8سے 10گھنٹے کام کر رہا ہے۔ وہ ایک پھیرے میں 50کلوگرام تک وزن اٹھاتا ہے جو کہ اس کی عمر کے آدمی کے لیے بہت زیادہ ہے مگر وہ اس کام کو ’خدمت‘ کہتا ہے۔وہ صرف ورکرز کا سامان ہی مفت نہیں اٹھاتا بلکہ اپنی بساط کے مطابق مسافروں کو کھانا اور پانی بھی مہیا کرتا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ ”رقم بعد میں بھی کمائی جا سکتی ہے۔ یہ وقت کمائی کرنے کا نہیں بلکہ دوسروں کی مدد کرنے کا ہے۔ مصیبت کے ان دنوں میں ایک دوسرے کی مدد کرنا باقی ہر چیز سے اہم ہے۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -