کشمیری طالب علم کو اعلی ٹیکنالوجی تعلیم کے لیے اسرائیل بھیجنے سے انکار

کشمیری طالب علم کو اعلی ٹیکنالوجی تعلیم کے لیے اسرائیل بھیجنے سے انکار

 سری نگر (کے پی آئی( بھارتی حکومت نے کشمیری طالب علم کو اعلی ٹیکنالوجی تعلیم کے لیے اسرائیل بھیجنے سے انکار کر دیا ہے ۔سرائیل میں ٹیکنالوجی منتقلی پروگرام 2015 کے لئے کشمیر سے منتخب ہوئے نوجوان کو اسرائیل جانے سے روکنے کے لیے پاسپورٹ جاری نہیں کیا جا رہا ۔۔ سرینگر میں پاسپورٹ حکام مذکورہ نوجوان مرزا محمد ادریس الحق بیگ کا کیس ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کے موڈ میں دکھائی نہیں دیتے ہیں۔ادریس کا کہنا ہے کہ اس نے اپنے پاسپورٹ کی تجدید کیلئے 21نومبر2014کو ایک فائل زیر نمبر SG01C4001051614کے تحت درخواست دے دی تاہم آج تک پاسپورٹ جاری نہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ آن لائن صرف یہ اطلاع دستیاب ہے کہ ریجنل پاسپورٹ آفس میں درخواست کا جائزہ لیا جارہا ہے۔ مذکورہ نوجوان کے مطابق جنوری 2015میں ہی ویریفکیشن کا عمل مکمل ہوچکا ہے ۔بیگ کا کہنا ہے کہ مقامی پولیس تھانہ اور سی آئی ڈی محکمہ نے بھی ویریفکیشن پاسپورٹ دفتر کو روانہ کردی ہے۔ انہوں نے کہاعمومی طور یہ سارا مسئلہ دو ماہ کا ہوتا ہے لیکن میرا کیس تو اب چوتھے مہینے میں چل رہا ہے لیکن پاسپورٹ اجرانہیں کیا جارہا ہے۔انہوں نے مزید کہا دلچسپ معاملہ یہ ہے کہ میں اور میری ماں نے ایک ہی دن فائل جمع کرلی تھی اور ماں نے یکم جنوری کو پاسپورٹ حاصل کرلیا جبکہ میں نے اس سلسلے میں ایک شکایت زیر نمبر (SRN) 1530307178 بھی کرلی ہے ،پھر بھی پاسپورٹ نہیں پہنچا۔ادریس بیگ نے وزیراعلی مفتی محمد سعید سے اس ضمن میں مداخلت کی اپیل کی ہے کہ اسے پاسپورٹ اجراکروانے میں متعلقہ دفاتر کو ہدایات دیں تاکہ وہ اسرائیل میں ٹیکنالوجی منتقلی پروگرام میں شامل ہوسکیں۔قابل ذکر ہے کہ مذکورہ نوجوان اس سے قبل کئی کارنامے انجام دے چکے ہیں۔

مزید : عالمی منظر