کراچی کے حالات پر آئینی اورقانونی حکمت عملی اپنائی جائے ، نوازش وڑائچ

کراچی کے حالات پر آئینی اورقانونی حکمت عملی اپنائی جائے ، نوازش وڑائچ

 لاہور( پ ر )آل پاکستان مسلم لیگ سینٹرل پنجاب کے رہنما اور لاہور ڈویژن کے کنوئیز نوازش وڑائچ ،نائب صدر شاہدہ نصیر ،اورسیکرٹری کواڈنیشن قاری افتخارالدین نے کہا ہے کہ کراچی کے حالات ٹھیک کرنے کیلئے آئینی اور قانونی حکمت عملی اپنا ہوگی وفاق اور سندھ حکومت بلیک میلنگ طرز عمل کو ترک کرکے دہشت گردی پھیلانے والی قوتوں کے خلاف ایکشن ہیں جو کہ گذشتہ کئی دہائیوں سے کراچی عوام کے خون سے حولی کھیل رہی ہیں۔اس امرکا اظہارانہوں نے گذشتہ روز صوبائی آفس میں کارکنان سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر یوتھ ونگ سنٹرل پنجاب کے صدر سعد ملک سمیت دیگر رہنما موجود تھے ۔نوازش وڑائچ نے کہا ہے کہ سید پر ویز مشرف کے دور اقتدار میں کراچی کے حالات پر امن تھے تمام سیاسی قوتیں اپنے اپنے دائرہ میں رہ کر کام کررہی تھیں ۔دہشت گردی اور قتل وغارت نام کی کوئی چیز نہ تھی ۔ملک پیپلزپارٹی اور ن لیگ کی حکومتیں آتے ہی دہشت گردی اور انتہا پسندی سراٹھانا شروع کردیا کراچی سمیت پورا پاکستان بارود کا ڈھیر بنکر رہ گیا شاہدہ نصیر نے کہا ہے کہ کراچی ہماری معاشی سہ رگ ہے ۔پس پردہ قوتیں ایسے کاٹنے کے درپے ہیں ۔ہمارے سیاسی رہنماؤں نے حکومت میںآکر اپنے مفادات کو تحفظ دینے پر توجہ دی کراچی کے حالات ٹھیک کرنے کیلئے کوئی سنجیدہ اور ٹھوس اور لحہ عمل اختیار نہ کیا ۔رہنماؤں نے کہا ہے کہ دہشتگرد وقوں کو صفحہ ہستی سے مٹانے کیلئے فوج کواختیارات دیکر کراچی میں داخل کیا جائے انہوں نے کہا کہ بلیک میلنگ پرمبنی طرز عمل ملک حالات مزید خراب کردے گا حکمرانوں نے محب الوطنی بننا چاہئے ذاتی مفادات کاتحفظ تب ہی ہوگا ۔جب ملک سلامت رہئے گا ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...