وزیر داخلہ نے غیر ملکی مجرموں کے تبادلوں کے معاہدوں پر عمل درآمد روک دیا

وزیر داخلہ نے غیر ملکی مجرموں کے تبادلوں کے معاہدوں پر عمل درآمد روک دیا
وزیر داخلہ نے غیر ملکی مجرموں کے تبادلوں کے معاہدوں پر عمل درآمد روک دیا

  


اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) وفاقی وزیر داخلہ کی جانب سے غیر ملکی مجرموں کے تبادلوں کے معاہدوں پر عمل درآمد روک دیا گیا ہے۔وزارت داخلہ کی جانب سے جاری احکامات میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی افسران جرائم میں ملوث پاکستانیوں کو وطن واپس لا کر ملی بھگت سے رہا کر دیتے تھے جبکہ ان افسران کے خلاف کاروائی کرنے کے لیے تمام ممالک کے ساتھ مجرموں کے تبادلے کے معاہدے پر عمل درآمد روک دیا گیا ہے ۔وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ مجرم چھوڑنے والے افسران کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی جبکہ اس جرم میں ملوث ملزمان کو گرفتار کر کے ان کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔

صولت مرزا، وصیت میں الطاف کے خلاف اہم معلومات دینے کی یقین دہانی

چوہدری نثار علی خان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو بدنام کرنے والے افسران کے ساتھ کوئی رعایت نہیں برتی جائے گی جبکہ نئی شفاف پالیسی بننے تک ان معاہدوں پر عمل درآمد نہیں کیا جائے گا جبکہ چھوڑے گئے مجرمان اور اس میں ملوث افسران کے خلاف انکوائری رپورٹ ایک ہفتے میں مکمل کر لی جائے گی۔یاد رہے کراچی کے علاقے لیاری گینگ وار کا مرکزی ملزم عزیر بلوچ اس وقت دبئی میں انٹرپول کی حراست میں ہے جبکہ سندھ پولیس کی ٹیم اسے لینے کے لیے امارات میں موجود ہے جبکہ دوسری جانب وزیر داخلہ کی جانب سے معاہدوں پر عمل درآمد روک دینے کے احکامات سامنے آ گئے ہیں ۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...