یونیسیف کی ”کرونا“ سے متعلق ہدایات

یونیسیف کی ”کرونا“ سے متعلق ہدایات

  



کرونا وائرس نے دنیا بھر میں جو خوف و ہراس پیدا کیا، وہ اس نقصان سے کہیں زیادہ ہے جو اموات کی صورت میں ہوا، تاہم یونیسیف کی ایک حالیہ رپورٹ سے کچھ حوصلہ ملتا ہے اور کم از کم ایسے ممالک جہاں موسم گرما شروع ہونے والا ہے اپنے درجہ حرارت کی وجہ سے اس سے محفوظ ہو جائیں گے کہ رپورٹ کے مطابق 26سے 27سینٹی گریڈ درجہ حرارت میں یہ وائرس مر جاتا ہے۔ پاکستان میں حالیہ بارشی دباؤ ختم ہوا تو درجہ حرارت میں اضافہ شروع ہو گا،جو جلد ہی 32سے 35 سینٹی گریڈ تک ہو جائے گا۔ یونیسیف کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کا سائز 500-400 مائیکرو قطر ہے، اس وجہ سے یہ کسی ماسک سے نہیں گزر سکتا۔ یہ ہوا میں نہیں پھیلتا، کسی شے پر رہتا ہے اس کی کل زندگی بارہ گھنٹے ہے، صابن اورپانی سے دھل بھی جاتا ہے اور کپڑے پر ہو تو نو گھنٹے زندہ رہتا ہے، کپڑے دھونے یا دو گھنٹے تک کپڑے دھوپ میں پڑے رہنے سے بھی مر جاتا ہے۔ ہاتھوں پر یہ 10منٹ تک زندہ رہتا ہے، اگر جیب میں الکحل سٹرلائیزڈ ہو تو اس سے ہاتھ صاف کرنا، بچنے کی صورت ہے یونیسیف کی طرف سے مزید ہدایت کی گئی ہے کہ گرم پانی استعمال کریں سورج کی حرارت لیں اور گرم پانی پئیں بھی،ٹھنڈا پانی اور ٹھنڈا کھانا کھانے سے گریز کریں آئس کریم نہ کھائیں اور بچوں کو بھی دور رکھیں، ان ہدایات پر عمل کرکے اس وائرس سے بچا جا سکتا ہے۔ یونیسیف عالمی ادارہ ہے اور اس کی طرف سے یہ وضاحت بروقت ہے، اس کا مقصد بھی خو ف و ہراس سے بچنااور ہدایات پر عمل کرکے وائرس کے پھیلاؤ کو روکنا ہے، عوام کو لاپرواہی سے گریز کرنا اور ان ہدایات پر عمل کرنا ہوگا۔ اللہ رب العزت سے امید ہے کہ یہ وائرس جلد ہی پاکستان سے مکمل ختم ہوگا کہ سورج کی حدت بڑھنے والی ہے۔

مزید : رائے /اداریہ