صنعتوں کیلئے لینڈ کنورژن چارجز میں کمی لائی جائے:لاہور چیمبر

  صنعتوں کیلئے لینڈ کنورژن چارجز میں کمی لائی جائے:لاہور چیمبر

  



لاہور(کامرس ڈیسک) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسڑی کے صدر عرفان اقبال شیخ نے حکومت پر زور دیا ہے کہ صنعتوں کیلئے لینڈ کنورژن چارجز میں فوری طور پر کمی لائے اور موجودہ صنعتوں کو بغیر کسی فیس کے ریگولرائز کیا جائے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان احمد خان بزدار کو لکھے ایک خط میں لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر عرفان اقبال شیخ نے کہا ہے کہ موجودہ لینڈ کنورژن چارجز بہت زیادہ ہیں اور صنعتیں انہیں ادا کرنے کی استطاعت نہیں رکھتیں۔انہوں نے کہا کہ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی جانب سے 2004 میں زمینی حقائق کو مد نظر رکھے بغیر لاہور کا ماسٹر پلان متعارف کرایا گیا تھا۔ 90ء کی دہائی کے شروع میں پنجاب حکومت نے دیہی انڈسٹریل ڈویلپمنٹ پلان کے تحٹ شہر (چونگی) سے باہر صنعتی یونٹ قائم کرنے کی اجازت دی تھی، جس کے نتیجے میں لاہور شہر اور اس کے گردو نواح میں بڑی تعداد میں صنعتیں قائم کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ لاہور چیمبر نے ہمیشہ موجودہ صنعتی یونٹس کو بغیر کسی فیس اور کنورژن چارجز کے ریگولرائز کرنے کی تجویز پیش کی ہے۔ یہ بات قابل تشویش ہے کہ نئے تجویز کردہ کنورژن چارجز انتہائی زیادہ ہیں جنہیں صنعتوں کیلئے فوری طور پر 1%کیا جائے۔صدر لاہور چیمبر نے کہا کہ اس سے ناصرف تاجر برادری کے مابین غیر یقینی کی سی صورتحال میں کمی آئے گی بلکہ صوبے بھر میں صنعتکاری کو فروغ ملے گا، ساتھ ہی سرمایہ کاری اور روزگار کے مواقعوں میں اضافہ ہوگا۔انہوں نے کہاکہ وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے ا س سلسلے میں تعاون کے ذریعے پبلک اور پرائیویٹ سیکٹر کے درمیان روابط مستحکم ہونگے جوکہ ملک کی معاشی ترقی کیلئے وقت کی اہم ضرورت ہے۔

مزید : کامرس