صنعتی وتجارتی سیکٹر میں روس کیساتھ رابطے بڑھائے جائیں،جواد رحیم

صنعتی وتجارتی سیکٹر میں روس کیساتھ رابطے بڑھائے جائیں،جواد رحیم

  

ملتان(نیوز رپورٹر)کوروناوائرس سے دنیا بھر کی تجارتی منڈیاں شدید متاثرہوئی ہیں اور اس پر کنٹرول کے بعد دنیا بھر میں تجارتی معاملات اور تعلقات بھی تبدیل ہوجائیں گے۔روس میں گزشتہ 27سال سے قیام پذیر اور بزنس کرنے والے بی اے سی پی (بزنس ایسوسی ایشن فار کوآپریشن ود پاکستان)کے صدر رشین چیمبر آف کامرس کے ممبر اور کاروباری معاملات(بقیہ نمبر35صفحہ12پر)

میں ”ڈسپیوٹ“ ختم کرنے کے لیے وہاں کی حکومت کی طرف سے قائم کردہ کمیٹی کے ممبر جواد رحیم نے گزشتہ روز ایوان تجارت وصنعت ملتان میں آگاہی دیتے ہوئے کہاکہ اب روس میں تجارت کرنااور اپنی کمپنی کھولنا بہت ا?سان اور محفوظ ترین ہے۔ تجارتی ویزہ21دن میں جبکہ ارجنٹ صرف ایک دن جبکہ ٹورسٹ ویزہ 30دن میں مل جاتا ہے۔ روس میں صرف ڈیڑھ سو ڈالر سے کمپنی کھولی جاسکتی ہے اور صرف تین دن میں وہاں کمپنی بنانے یا کاروبار کرنے کی اجازت مل جاتی ہے۔انہوں نے کہاکہ روس میں ٹیکس کی شرح صرف 6فیصد تک ہے۔سال بھر میں جو کمائیں خودہی چھ فیصد دے دیں۔ لیبر ریٹ بہت ہی کم ہے۔روس سے پاکستان یاپاکستان سے روس قرم بھیجنا بہت آسان ہے۔ چوبیس گھنٹوں کے اندر اندر رقم پاکستانی بینکوں میں ٹرانسفر ہوجاتی ہے۔ ایلسی بھی آسانی سے کھل جاتی ہے۔ وہاں بزنس کرنے کے لیے دوتین مشکلات ہیں جن میں بڑی مشکل روسی زبان ہے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے پاکستان کے بارے میں ایک ڈاکومنٹری بھی بنائی ہے جس میں پاکستانی بزنس،صنعت اور یہاں کے ماحول اوردیگرمعلومات دی گئی ہیں تاکہ لوگوں کو پتہ چلے کہ پاکستان میں دہشت گردی ختم اور ترقی کاعمل شروع ہوگیا ہے۔ پاکستان روس میں کھانے پینے کی اشیاء، کچن میں استعمال ہونے والی اشیاء،ٹیکسٹائل مصنوعات،ہربل مصنوعات،مصالحہ جات،فارماسیوٹیکل،شوگر اور اس سے تیارہونے والے مشروبات، سبزیاں،فروٹ خصوصاآم اوراس سے تیار ہونے والی مصنوعات جتنا چاہے بھیج دیں بڑی مارکیٹ موجودہے۔آج اگر پاکستان نے اس مارکیٹ کا رخ نہ کیاتو پھریہ بہت بڑی مارکیٹ ہاتھ سے نکل جائے گی۔روس میں 27ملین سے زائد مسلمان جبکہ اس کی آبادی پاکستان سے تقریباً آدھی ہے۔جلد ہی ایک تجارتی وصنعتی نمائش روس میں پاکستانی مصنوعات کی اور ایک روسی مصنوعات کی پاکستان میں منعقد ہوگی۔ ہم پورے پاکستان میں صنعتی وتجارتی سیکٹر میں روس کے ساتھ تجارت بڑھانے کے سلسلے میں معلومات دے رہے ہیں۔ چیمبرز بھی اپنے ممبران کی سطح پر وفود کے تبادلے کریں۔ اس موقع پر ایوان تجارت وصنعت ملتان کے نائب صدر میاں ر اشد اقبال نے مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -