پشاور،شمالی وزیر ستان کے متاثرین کا احتجاجی مظاہرہ جاری

پشاور،شمالی وزیر ستان کے متاثرین کا احتجاجی مظاہرہ جاری

  



پشاور (سٹی رپورٹر)میران شاہ بازار شمالی وزیرستان کے متاثرہ دکانداروں نے شہر میں گزشتہ ایک ہفتے سے جاری بارشوں کے سلسلے کے رکنے کے بعد ایک بار پھر سے اپنے احتجاج کادوبارہ آغاز کرتے ہوئے صوبائی اسمبلی کی عمارت کے سامنے پہنچ چکے ہیں اور جہاں وقفے وقفے ڈھول کی تاپ پر اپنا احتجاج منفرد انداز میں ریکاڑد کرارہے ہیں، واضح رہے کہ میران شاہ بازار کے تاجر جو گزشتہ ڈیڑھ مہینے سے اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی دھرنا پشاور پریس کلب اور صوبائی اسمبلی کی عمارت کے باہر جاری رکھے ہوئیں نے احتجاج کا ایک انوکھا طریقہ متعارف کیا ہے،صوبائی دارلحکومت کی تاریخ میں شائد ڈھول کی تھاپ اور موسیقی کی لے پر احتجاج کا یہ نیا انداز متعارف ہوا ہے، جس میں کسی قسم کی تشدد کا کوئی عنصر نظر نہیں آرہا ہے اور مظاہرین کمال صبر اور استقامت کا مظاہرہ کرتے ہوئے نہیت منفرد انداز میں اپنا احتجاج جاری رکھے ہوئے ہیں، دریں اثنا گزشتہ روز مشیر اطلاعات خیبر پختونخوا اجمل وزیر نے صحافی کے سوال کے جواب میں کہا کہ میران شاہ بازار کے متاثرین کے لئے زر تلافی کے لئے صوبائی کابینہ نے معقول رقم کی منظوری دی ہے، جس کے تحت فی مرلہ 15 لاکھ روپے ب طور معاوضہ دئے جانے کا فیصلہ ہوچکا ہے لیکن میران شاہ بازار کے تاجر معاوضے کی رقم کے طور پر بہت زیادہ رقم کا مطالبہ کر رہے ہیں، جو کہ صوبائی حکومت کے لئے ناممکن ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ میران شاہ بازار کے تاجر حکومتی پیشکش کا مثبت جو اب دینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر