دوران ڈکیتی مزاحمت پرقائد اعظم کالج پشاورکے زخمی لیکچرار دم توڑگئے

دوران ڈکیتی مزاحمت پرقائد اعظم کالج پشاورکے زخمی لیکچرار دم توڑگئے

  



شیرگڑھ(نامہ نگار)تین مہینے پہلے رہزنوں کے ساتھ مزاحمت کے دوران زخمی ہونے والا قائد اعظم کالج پشاور کا لکچرار زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ دیا جن کوہاتھیان میں آہوں اور سسکیوں کے ساتھ مقامی قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا جنازے کے موقع پر ہاتھیان کے عوامی،سماجی حلقوں میں شدید غم و غصے کی لہر ائی جی پولیس،ڈی ائی جی پشاور اور سی سی پی او پشاور سے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ اگر فوری طور پر قاتلوں کو گرفتار نہ کیا گیا تو پشاور میں بھر پور احتجاج کریں گے تفصیلات کے مطابق ہاتھیان کا رہائشی محمد اعجاز ولد شیرزادہ جو قائد اعظم کالج پشاور میں لیکچرار کی حیثیت سے ڈیوٹی انجام دیتے تھے تین مہینے قبل رہزنی کے دوران مزاحمت پر نامعلوم رہزنوں نے فائرنگ کرکے شدید زخمی کردیا تھا جو تین مہینے موت سے لڑتے لڑتے زندگی کی بازی ہار گئی جنہیں آہوں اور سسکیوں کے ساتھ مقامی قبرستان میں سپرد خاک کیا گیا جنازے کے موقع پرہاتھیان کے عوام نے ائی جی پولیس خیبر پختونخواہ اور صوبائی حکومت سے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا اور دھمکی دی کہ اگر فوری طور پر قاتلوں کو گرفتار نہ کیا گیا تو احتجاج کریں گے

مزید : صفحہ اول