اپوزیشن فراڈیوں کا ٹولہ، مولانا فضل الرحمن کو اوپر چڑھا کر سیڑ ھی اتارلی، سینیٹر مشتاق احمد

اپوزیشن فراڈیوں کا ٹولہ، مولانا فضل الرحمن کو اوپر چڑھا کر سیڑ ھی اتارلی، ...

  



چارسدہ (بیو ر و رپورٹ) جماعت اسلامی کے صوبائی امیر سنیٹر مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ اپو زیشن فراڈیوں کا ٹولہ ہے جنہوں نے مولانا فضل الرحمان کو سیڑھی پر چڑھا کر سیڑھی اُٹھا کر بھاگ گئے۔ اپو زیشن پس پر دہ حکومت کے ساتھ ملی ہوئی ہے۔ حکومت اور اپو زیشن ایک ہی ایجنڈے پر کار فر ما ہے۔ پارلیمنٹ کے آئینی بالادستی پر دیگر قوتوں نے شب خون مارا ہے۔ ایف آئی اے نے آٹا اور چینی مافیا کی نشاندہی کی ہے مگر کپتان اپنے چہیتوں کے خلاف کاروائی سے گریزاں ہیں۔ ملز اونر ز کو چینی دس روپے فی کلو پڑ رہی ہے مگر عوام 80روپے میں خرید رہے ہیں۔ وہ چارسدہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر جماعت اسلامی کے ضلعی امیر محمد ریاض خان، ظہور ظریف خیل، حیات خان، ہارون خان اور دیگر بھی موجود تھے۔ مشتاق احمد خان نے کہا کہ افغانستان میں دو صدور کی خلف برداری اچھا شگون نہیں مگر یقین ہے کہ انٹر افغان مذاکرات میں تمام مسائل حل ہو جائینگے۔ بھاری اور جدید ہتھیاروں سے لیس امریکی اور نیٹو افواج شکست خوردہ افغانستان سے نکل رہی ہے اور جن کو کل دہشت گرد کہا کر تے تھے وہی امریکہ اور اس کے حواری آج مجاہدین کو بہترین لوگ قرار دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پوری دنیا میں کرونا وائرس کے حوالے سے ایمر جنسی نافذ ہے مگر حکومت پاکستان اس حوالے سے غفلت اور لاپر واہی کا مظاہرہ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ سلیکٹیڈ حکومت کو عوام کی تائید حاصل نہیں۔ جعلی مینڈیٹ کے ذریعے مسلط کر دہ وزیر اعظم اور حکومت کو عوام کے مسائل کا علم ہی نہیں۔ غربت اور مہنگائی کی وجہ سے عوام کا جینا محال ہو چکا ہے مگر کپتان کا ٹولہ میڈیا پر سب اچھا کا گر دان کر رہے ہیں۔ آٹا اور چینی چور مافیا کے خلاف کپتان کے ماتحت ادارے آئی اے کے ڈی جی واجد ضیا ء کی سربراہی میں آٹا چوروں اور چینی چو ر مافیا کا تغین کیا گیا مگر کپتان نے اپنے چہیتوں کو بچانے کیلئے حیلے بہانے بنا کر از سر نو انکوائری کے لئے کمیشن مقرر کیا ہے۔ مل اونرز کو چینی دس روپے فی کلو پڑ رہی ہے مگر غریب عوام پر 80روپے فی کلو فروخت کیا جا رہا ہے۔ عالمی مارکیٹ میں پٹرول کی قیمت پچا س فی صد کم ہو چکی ہے مگر حکومت قیمت کم کرنے کی بجائے الٹا 70روپے فی لیٹر بچا کر عوام سے غنڈہ ٹیکس اور بھتہ وصول کر رہی ہے۔ مشتا ق احمد خان نے ا پو زیشن کو فراڈیوں کا ٹولہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کو سیڑھی پر چڑھا کر سیڑھی بھگا کر لے گئے اور مولانا فضل الرحمان کو آزادی مار چ میں اکیلا چھوڑ دیا۔ اپوزیشن اور حکومت پس پر دہ آپس میں ملی ہوئی ہے اور ان کا ایک ہی ایجنڈا ہے۔ پارلیمنٹ کے اختیارات کو سلب کئے گئے ہیں اور جب تک پارلیمنٹ کو بالادستی حاصل نہیں ہو تی وطن عزیز میں حقیقی جمہوریت قائم نہیں ہو سکتی۔ انہوں نے شفاف اور غیر جانبدارانہ انتخابات کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا کہ فوج اور اسٹیبلشمنٹ کی مداخلت اور کر دار کو ختم کرنے کیلئے سیاسی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا ہو گابصورت دیگر سیاستدان اور جمہوریت ذلیل و خوار ہو تی رہے گی۔زینب الرٹ بل پر تنقید کر تے ہوئے مشتاق احمد خان نے کہا کہ مذکورہ بل میں سزاؤں میں اضافہ نہیں کیا گیاجو وقت اور حالات کی ضرورت تھی۔ انہوں نے کہاکہ اس حوالے سے وہ ترمیمی بل سینٹ میں پیش کرینگے۔ نیب کو دجال قرار دیتے ہوئے مشتا ق احمد خان نے کہا کہ دجال کی طرح نیب بھی ایک آنکھ رکھتی ہے جس پر ان کو صرف اپو زیشن اور میڈیا نظر آرہی ہے۔ انہوں نے میر شکیل الرحمان کی گرفتاری کی شدید مذمت کی اور کہا کہ 34سال پہلے خریدی گئی پر اپرٹی میں میر شکیل کی گرفتاری سوالیہ نشان ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیب کپتان گٹھ جوڑ سے میڈیا کو دبانے کی کو شش کی جا رہی ہے۔ انہوں نے میر شکیل الرحمان کی فوری رہائی کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا کہ حکومت پر تنقید کے آڑ میں میر شکیل کی گرفتاری جماعت اسلامی برداشت نہیں کر سکتی۔ سابق صوبائی وزراء عاطف خان، شہرام ترکئی اور ایم این اے نور عالم کو سچ بولنے کی سزا دی جا رہی ہے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر