”کیامیں2036تک حکومت کرسکتاہوں“،روسی صدرولادیمیر پیوٹن پارلیمنٹ پہنچ گئےلیکن جواب کیا ملا؟

”کیامیں2036تک حکومت کرسکتاہوں“،روسی صدرولادیمیر پیوٹن پارلیمنٹ پہنچ ...
”کیامیں2036تک حکومت کرسکتاہوں“،روسی صدرولادیمیر پیوٹن پارلیمنٹ پہنچ گئےلیکن جواب کیا ملا؟

  



ماسکو(ڈیلی پاکستان آن لائن)دودہائیوں سے حکومت کرنے والے روسی صدر ولادیمیر پیوٹن مزیدبارہ سال تک حکومت کرنے کے خواہاں ہیں۔گزشتہ روز مدت صدارت میں توسیع کے قانون میں تبدیلی کیلئے پارلیمنٹ پہنچ گئے اورباقاعدہ بل جمع کرادیاجس کے تحت وہ2024کے بعد بھی بارہ سال یعنی 2036 تک حکمرانی کرسکتے ہیں۔ حکومتی بل کو پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں نے اور علاقائی اسمبلیوں نے متفقہ طور پر منظوری دے دی۔

کریملن کے مطابق روسی صدر نے ملک کی آئینی عدالت کو بل پیش کیا ہے کہ وہ صدارت کی مدت کے حوالے سے موجود قانون میں ترمیم کرے۔ کریملن کی جانب سے جاری کردہ بیان میں بتایاگیاہے کہ بل کوپارلیمنٹ کے ایوان بالا ، زیریں اور علاقائی اسمبلیوں دونوں نے متفقہ طور پر منظور کرلیا ہے جس کے بعد صدر نے ان پر دستخط کئے۔ تاہم اب آئینی عدالت اس پر حتمی فیصلہ دے گی جس کے بعد یہ بل باقاعدہ قانون بن جائے گا۔آئینی عدالت کا فیصلہ بائیس اپریل کو متوقع ہے۔

یاد رہے جنوری میں صدر ولادیمیر پیوٹن نے بڑی تبدیلیاں کرتے ہوئے طاقت کا محور صدارتی محل کے بجائے پارلیمنٹ کو بنادیا تھا۔آئینی عدالت کی منظوری کے بعد صدر ولادیمیر پیوٹن 2024کے بعد چھ چھ سال کی مزید دومدتوں کیلئے صدر بننے کیلئے اہل قرار دے دیئے جائیں گے۔

مزید : بین الاقوامی