امان اللہ کے تعزیتی ریفرنس میں فیاض الحسن چوہان کی امداد کا ذکر کے احسان جتانے کی کوشش، سہیل احمد نے فوری’ قرض ‘اتار دیا

امان اللہ کے تعزیتی ریفرنس میں فیاض الحسن چوہان کی امداد کا ذکر کے احسان ...
امان اللہ کے تعزیتی ریفرنس میں فیاض الحسن چوہان کی امداد کا ذکر کے احسان جتانے کی کوشش، سہیل احمد نے فوری’ قرض ‘اتار دیا

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )پنجاب کے وزیر اطلات فیاض الحسن چوہان کو فنکار اور کامیڈی کے بادشاہ امان اللہ خان کے تعزیتی ریفرنس میں اپنی تعریفیں کرنا مہنگا پڑگیا کیونکہ سہیل احمد اورخالد بٹ نے سیدھی سیدھی سنا ڈالیں ۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان تعزیتی ریفرنس میں خطاب کیلئے آئے تو انہوں نے اپنی تعریفوں کے پل باندھے اور ساتھ ہی امان اللہ کو دی گئی امداد کا ذکر کر کے احسان جتایا جس پر فنکار برادری کے دل کو چوٹ پہنچی اور وہ اس پر خاموش نہ ر ہ سکے ۔

خالد بٹ نے کہا کہ ”ریفرنس جس کا آدمی کا ہوتاہے اس کے بارے میں گفتگو کی جاتی ہے ،مجھے یوں لگا کہ یہ امان اللہ صاحب کا ریفرنس نہیں تھا بلکہ کچھ لوگ اپنی کلیئرنس دینے کیلئے آئے ہوئے تھے کہ میں نے یہ کیا ،میں نے یہ کیا ، ان کی عزت نفس کو مجروح کرتے ہیں تو پھر کیوں آکر پیسے دیتے ہیں ،کبھی مانگنے کیلئے نہ جانا سب سے پہلے توآرٹسٹ وہیں مر جاتاہے جب وہ مانگنے کیلئے ہاتھ پھیلاتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مرُدوں سے جانور اپنے پیٹ بھرتے ہیں ، کوئی بھی شخص ان کے تعزیتی ریفرنس میں یہ بتانا چاہے گا کہ ہم نے آرٹسٹوں میں کتنے پیسے تقسیم کیے تو خدا کی قسم آپ نے امان اللہ کی ہی فیس ادا نہیں کی بلکہ آپ ان کے ایک شو کے پیسے نہیں دے سکے ، آپ یہاں پرامان اللہ کے ساتھ حساب نہ کریں ، امان اللہ کی تو پوری عوام مقروض ہے ، یہ امان اللہ کا تعزیتی ریفرنس ہے منسٹر صاحب کا نہیں ۔

مزید : قومی