اس عرب بھکاری کےپاس اتنی دولت ہے کہ آپ کتنی ہی کوشش کر لیں یقین نہیں آئے گا

اس عرب بھکاری کےپاس اتنی دولت ہے کہ آپ کتنی ہی کوشش کر لیں یقین نہیں آئے گا
اس عرب بھکاری کےپاس اتنی دولت ہے کہ آپ کتنی ہی کوشش کر لیں یقین نہیں آئے گا

  

قاہرہ (نیوز ڈیسک) اپنی محنت کی کمائی میں سے کچھ روپے کسی گداگر کے ہاتھ پر رکھنے والوں کو اکثر یہ اندازہ نہیں ہوتا کہ بظاہر بدحال نظر آنے والا گداگر خیرات دینے والے کی نسبت سینکڑوں گنا مالدار ہوسکتا ہے۔ مصر کے علاقے بنی سوئف سے تعلق رکھنے والا ایک گداگر بھی ایک ایسی ہی مثال ہے جو لوگوں سے مانگ مانگ کر کروڑوں کی جائیداد اور بینک بیلنس بناچکا ہے۔

اخبار ”الفجر“ کے مطابق 70 سالہ کروڑ پتی بھکاری، جس کا نام کمال بتایا گیا ہے، کی حقیقت اس وقت عیاں ہوئی جب اسے جاننے والے ایک شہری نے ایک بڑے بینک میں اس کی شاندار آﺅ بھگت دیکھی۔ بھکاری کے لئے حیرت انگیز پروٹوکول دیکھ کر شہری نے بینک ملازمین سے پوچھا تو اسے بتایا گیا کہ یہ صاحب بینک کے اہم ترین گاہکوں میں سے ایک ہیں کیونکہ ان کے اکاﺅنٹ میں کم از کم 3450,000 برطانوی پاﺅنڈ (تقریباً 55 کروڑ پاکستانی روپے) ہیں۔ معمر بھکاری کے بارے میں یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ وہ گیزا کے علاقے فیصل ایونیو میں دو عالیشان جائیدادوں کا مالک بھی ہے اور اس نے یہ تمام دولت اور جائیدادیں بنی سوئف کے علاقے میں بھیک مانگ کر بنائی ہیں۔ مصری میڈیا کے مطابق کمال بھیک مانگ کر کروڑ پتی بننے کی واحد مثال نہیں ہے بلکہ مصر میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے گداگری کو بطور پیشہ اپنالیا ہے اور اس سے بھاری دولت کمارہے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس