’’را‘‘پاکستان میں بد امنی پھیلا رہی ہے ،بھارت کو ثبوت فراہم کر دیئے ،سیکرٹری خارجہ

’’را‘‘پاکستان میں بد امنی پھیلا رہی ہے ،بھارت کو ثبوت فراہم کر دیئے ...

 اسلام آباد(خصوصی رپورٹ) پاکستان کے سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چودھری نے کہا ہے کہ بھارت کو کئی بار ’’را‘‘کے پاکستان میں دہشتگردی میں ملوث ہونے کے ثبوت فراہم کر چکے ہیں ، وزیراعظم کے دورہ افغانستان میں بھی یہ معاملہ اٹھایا گیا ، افغانستان کی سرزمین پاکستان خلاف استعمال نہیں ہونی چاہئے۔اسلام آباد میں صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چودھری نے کہا ہے کہ پاکستان بھارت کو متعدد مرتبہ 'را' کے دہشتگردی میں ملوث ہونے کے ثبوت فراہم کر چکا ہے، بھارت کو بتا چکے ہیں کہ بھارتی ایجنسی 'را' پاکستان میں بدامنی پھیلاتی ہے۔ کراچی میں دو ملزمان نے 'را' سے تربیت لینے کا اعتراف کیا۔ سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ وزیر اعظم کے دورہ افغانستان میں افغان قیادت کیساتھ بھی یہ معاملہ اٹھایا گیا، افغانستان پر واضح کر دیا ہے کہ انکی سرزمین ہمارے خلاف استعمال نہیں ہونی چاہئے۔ چاہے یہ طالبان کی طرف سے ہو یا بھارت کی طرف سے ، سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ پاکستانی قوم اور قیادت میں دہشتگردی کے خاتمے پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے۔ قومی قیادت دہشتگردی کے مائنڈ سیٹ کے خاتمے پر متحد ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان گزشتہ پندرہ سال سے دہشتگردوں کیخلاف جنگ لڑ رہا ہے جو ابھی ختم نہیں ہوئی۔ اب بھی دہشتگردوں کے کچھ گروہ باقی ہیں جو کارروائیاں کر رہے ہیں جن میں گزشتہ روز کراچی میں اور کچھ عرصہ قبل پشاور میں ہونیوالی کارروائی شامل ہیں۔ دہشتگردی کرنیوالے اور ذمہ داری قبول کرنیوالے الگ الگ بھی ہو سکتے ہیں، تحقیقات کے ذریعے ہی اصل مجرموں کا پتا لگایا جائیگا۔ پاکستان میں داعش کی موجودگی کے حوالے سے کچھ نہیں کہہ سکتا ، داعش پاکستان سمیت دنیا کیلئے ایک ٹھوس خطرہ ہے جس سے نمٹنے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں۔دریں اثناء پاکستان نے ان الزامات کو سختی سے مسترد کر دیا ہے کہ حکومت دومئی 2011کو اسامہ بن لادن کے خلاف امریکی آپریشن کے بارے میں پہلے سے آگاہ تھی۔ جمعرات کو اسلام آباد میں اپنی ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں دفتر خارجہ کے ترجمان قاضی خلیل اللہ نے کہا کہ امریکی صحافی سیمور ہرش کی طرف سے پاکستان کے بارے میں الزامات مکمل طور پر بے بنیاد ہیں۔جب ان سے بھارتی خفیہ ادارے را کی طرف سے افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال کرنے کے بارے میں پوچھا گیا تو ترجمان نے کہا کہ پاکستان اور افغانستان کے دوطرفہ تعلقات میں یہ بات واضح کی گئی ہے کہ ہم اپنی سرزمین ایک دوسرے کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے افغان حکومت کو اپنی تشویش کے بارے میں بتا دیا ہے کہ را کو پاکستان میں عدم استحکام پیدا کرنے کیلئے ان کی سرزمین کو استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ایک سوال پر ترجمان نے کہاکہ کراچی بس پر فائرنگ کے واقعہ کی تحقیقات جاری ہیں ابھی کوئی حتمی بات نہیں کہی جاسکتی ۔

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک ) وفاقی وزیر دفاع خواجہ محمد آصف نے کہا ہے کہ بھارتی خفیہ ایجنسی ’را‘ پاکستان میں موجود دہشت گرد تنظیموں کی سرپرستی کر رہی ہے ۔ نجی ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ کراچی کو اس وقت دہشت گردی کا سامنا ہے اور اس کی ذمہ داری سندھ حکومت کے ساتھ ساتھ وہاں کی سیاسی جماعتوں کی بھی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ سندھ حکومت کو اپنے انداز میں تبدیلی لانی ہو گی تاکہ شہر سے دہشت گردی کا خاتمہ ہو سکے ۔ وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ کراچی کو دہشت گردی کی جانب دھکیلا گیا ہے اور سیاسی جماعتوں نے خاص مقاصد کے تحت عسکری ونگ بنائے ہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ کراچی کے حالات میں بہتری آئی ہے اور اغواء برائے تاوان ، ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری جیسی سنگین وارداتوں میں واضح کمی پیدا ہوئی ہے ۔ خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ کراچی شہر کو اس وقت پانی کی قلت کا بھی سامان ہے جبکہ یہ قلت جان بوجھ کر پیدا کی گئی ہے ۔ پولیس کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ سندھ پولیس نے دہشت گردی کی خاطر بے شمار قربانیاں دیں ہیں اور وہ پولیس کی کارکردگی سے بھی مطمئن ہیں

مزید : صفحہ اول