پہلے این اے 125کی وکٹ گری اب این اے 122کی گرنے والی ہے :عمران خان

پہلے این اے 125کی وکٹ گری اب این اے 122کی گرنے والی ہے :عمران خان
 پہلے این اے 125کی وکٹ گری اب این اے 122کی گرنے والی ہے :عمران خان

  

ملتان (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحر یک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پہلےقومی اسمبلی کے حلقہ  این اے 125کی وکٹ گری اب این اے 122کی گرنے والی ہے کیونکہ کل این اے 122کا کیس الیکشن ٹریبونل میں جائے گااور میرا دل کہتا ہے کہ 2015الیکشن کا سال ہے ۔

تفصیلات کے مطابق ملتان میں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ 1970سے دوجماعتیں باریاں لے رہی ہیں اور پہلے ان کی جائیدادیں بڑھی اور اب ان کے بچوں کی بڑھ رہی ہیں۔عمران خان نے عوام کو جو ڈیشل کمیشن پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ جو ڈیشل کمیشن کی وجہ سے بہت سی باتیں سامنے آئیں گی اور یہ ثابت ہوگیا الیکشن کمیشن نے اضافی بیلٹ پیپرز چھاپے اور سعد رفیق کے حلقے میں ایک لاکھ سے زیادہ اضافی بیلٹ پیپرز بھیجے گئے ۔آج ملتان میں میڈیا پر ہونے والے تشدد کے حوالے سے  آئی جی پنجاب کے مذمتی بیان پر عمران خان نے انہیں آڑے ہاتھوں لیا۔عمران خان کا کہنا تھا کہ آئی جی پنجاب کو شرم آنی چاہیے کہ وہ قوم کے پیسے سے تنخواہ لیتے ہیں مگر ملازمت شریف خاندان کی کرتے ہیں۔

عمران خان نے جلسے کے دوران سوال کیا کہ خیبر پختونخواہ کے ملازمین نے میرے گھر کے باہر دو مہینے دھرنا دیا کیا کوئی رائے ونڈ جاکر کوئی دھرنا دے سکتا ہے؟۔ان کا کہنا تھا کہ پنجاب اور سندھ کی پولیس کو سیاسی کر دیا گیا ہے جب تک پولیس کو غیر سیاسی نہیں کیا جاتا کراچی میں امن نہیں آئے گا۔عمران خان نے واضح کیا کہ کے پی کے میں جرائم میں 60فیصد کمی آئی ہے کیونکہ وہاں پولیس میں سیاسی مداخلت نہیں ہے ۔

عمران خان نے ملتان والوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ یہ زندہ دل لوگ ہیں اور میں یہاں صرف ایک ضمنی الیکشن کیلئے جلسہ کرنے نہیں آیایہ دونظریوں کا مقابلہ ہے۔عمران خان کا کہنا تھا کہ موٹر وے بنانے سے قومیں ترقی نہیں کر تیں ، ملکوں کی اتنی آبادی نہیں ہوتی جتنے ہمارے بچے سکولوں سے باہر ہیں ملتان کی عوام مر رہی ہے اور یہاں 60ارب جنگلہ بس پرخرچ کیاجا رہا ہے اگر یہ پیسہ کسانوں کو دیتے اور ہسپتالوں پر خرچ کرتے تو اچھا ہوتا مگر حکمرانوں کو اپنی جیب کی پڑی ہے کیونکہ جنگلہ بس جیسے منصوبوں سے کمیشن ملتی ہے۔عمران خان کا مزید کہنا تھا کہ حکمرانوں نے اپنے وعدے پورے نہیں کیے جس کی وجہ سے ملتان کی عوام لوڈ شیڈنگ سے مر رہی ہے یہاں لوگوں کو پینے کیلئے صاف پانی میسر نہیں ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ ایسا نظام ہونا چاہیے جہاں ضلع کے لوگ اپنے فیصلے خود کریں کہ انہیں کیا چاہیے اور کیا نہیں اورملتان کے فیصلے لاہور میں نہیں ہونے چاہیے۔

عمران خان نے واضح کیا کہ ہم وہ پاکستان چاہتے ہیں جہاں انسانوں کی قدر ہو ،جہاں لوگوں پر ان کا پیسہ خرچ کیا جائے ،جہاں کسانوں کو ان کا حق دیا جائے اور جہاں لوگوں کو اپنا حق حا صل کرنے کیلئے رشوت نہ دینی پڑے۔

مزید : قومی /اہم خبریں