قصبوں میں جرائم بے قابو ، رینجرز یونیفارم پہن کر وارداتوں کے انسداد کیلئے خصوصی سکواڈ قائم

قصبوں میں جرائم بے قابو ، رینجرز یونیفارم پہن کر وارداتوں کے انسداد کیلئے ...

  

لاہور( لیاقت کھرل)ہڈیارہ ، باٹا پور اور مناواں سمیت برکی کے علاقوں میں رینجرز کی یونیفارم پہن کر ڈکیتی اور راہزنی کی وارداتوں کی روک تھام کے لئے متعلقہ ایس پیز کی نگرانی میں نائٹ پٹرولنگ کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں متعلقہ سرکل افسر ( ڈی ایس پیز) بھی نائف پٹرولنگ افسروں کے ساتھ گشت کریں گے۔ ذرائع کے مطابق شہر کے مضافاتی علاقوں میں کرائم کی شرح میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے، نائٹ پٹرولنگ افسران ہوٹلوں ، ٹھنڈے کمروں اور پٹرولنگ گاڑیوں میں نیند پوری کرنے لگے۔ ذرائع کے مطابق چوہنگ، مانگا ، سندر، رائے ونڈ اور کاہنہ اورشاہدرہ میں گشت برائے نام کیا جاتا ہے،جرائم پیشہ افرادپولیس کی وردیوں کی آڑ لے کر مطلوبہ کارروائی ڈالتے اور پھر روپوش ہو جاتے ہیں۔ ان علاقوں میں ڈکیتی ، راہزنی اور ڈکیتی قتل سمیت امن و امان کی ناقص صورتحال ہے۔ ہڈیارہ، مناواں ،باٹا پور اور برکی وہ علاقے ہیں جہاں شام ڈھلتے ہی خوف کے سائے لہرانے لگتے ہیں۔ حساس ادارے کی رپورٹ نے پولیس حکام کی جانب سے کئے گئے تمام تر اقدامات اور انتظامات کو ناقص قرار دے دیا ۔ متعلقہ ایس پیز اور ڈی ایس پیز نے عدم دلچسپی ظاہر کر رکھی ہے جس کے باعث مضافاتی علاقوں میں نائٹ پٹرولنگ افسران اور اہلکاروں نے بھی محض خانہ پری کے طور پر گشت کرنے کا سلسلہ شروع کر رکھا ہے اور نائٹ پٹرولنگ کے لئے 60 کلو میٹر گشت کی جگہ محض 25 سے 30 کلو میٹر گشت کرنے کی رپورٹ سامنے آئی ہے جس میں رواں ماہ میں کینٹ ڈویژن کی نائٹ پٹرولنگ پر مامور چار گاڑیوں نے مقررہ حد تک پٹرولنگ نہ کی ہے، جبکہ سٹی ڈویژن اور صدر ڈویژن سمیت ماڈل ٹاؤن ڈویژن میں بھی تین تین گاڑیوں نے کم پٹرولنگ کی ہے اور رات کو گشت و سنیپ چیکنگ کی بجائے ارد گرد ہوٹلوں، ریسٹورنٹوں اور ڈیروں سمیت گاڑیوں میں آرام کرنا وطیرہ بنا رکھا ہے جس پر خفیہ رپورٹ کی بنا پرپٹرولنگ افسروں ایس ایچ او ز و انچارج انویسٹی گیشنزتھانہ باٹا پور، ہیئر، مناواں اورچار ڈی ایس پیز کی جواب طلبی کی گئی ہے ۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ نائٹ پٹرولنگ ناقص ہونے کے باعث حساس اداروں کی یونیفارم میں ڈاکوؤں اور راہزنوں کی لوٹ مار اور خوف کی فضا ختم نہیں ہو سکی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ تھانہ چوہنگ، مناواں اور تھانہ ہیئر کی حدود میں ٹریننگ سنٹرز قائم ہیں جبکہ تھانہ چوہنگ کاعلاقہ اور آبادی 17 کلو میٹر پر محیط اور سالانہ 22 ہزار سے زائد مقدمات اور ساڑھے تین لاکھ کی آبادی ، اسی طرح تھانہ رائے ونڈ کی حدود میں سالانہ 2000 سے زائد مقدمات ، مانگا منڈی اور تھانہ سندر سمیت کاہنہ میں ڈاکوؤں اور راہزنوں کی زیادہ لوٹ مار، جبکہ برکی اور ہڈیارہ سمیت مناواں اور باٹا پور چاروں تھانوں کی حدود میں سمگلنگ ، منشیات فروشی کے کئی سالوں سے اڈے قائم ہیں۔ ان تھانوں کی حدود میں مزید تھانے قائم کرنے اور کمانڈوز پولیس کی تعیناتی کا ذکر کیا گیا ہے۔

مزید :

علاقائی -