نظربندآسیہ اندرابی اور محمد رستم بٹ کی علالت پرسید علی گیلانی کا اظہارتشویش ، فوری رہائی کا مطالبہ

نظربندآسیہ اندرابی اور محمد رستم بٹ کی علالت پرسید علی گیلانی کا اظہارتشویش ...

  

سرینگر(آن لائن)مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چےئرمین سید علی گیلانی نے نظربندی کے دوران دختران ملت کی چےئرپرسن آسیہ اندرابی اور تحریک حریت کے رہنما محمد رستم بٹ کے سخت علیل ہونے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کی فوری رہائی کا مطالبہ کیاہے۔ سید علی گیلانی نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا کہ آسیہ اندرابی کئی عارضوں میں مبتلا ہیں جبکہ محمد رستم بٹ کو ڈاکٹروں نے فوری سرجری کا مشورہ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی اور بی جے پی کی مخلوط انتظامیہ سیاسی نظربندوں کے ساتھ انتہائی غیر منصفانہ اور ظالمانہ سلوک روا رکھے ہوئے ہے۔

اور انہیں جیلوں کے اندر بھی سیاسی انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔انہوں نے کہاکہ علیل نظربندوں کو حالات کے رحم وکرم پر چھوڑدیا گیا ہے اور ان کے علاج ومعالجے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ آسیہ اندرابی اور ان کی ساتھی کارکن فہمیدہ صوفی کو بغیر کسی جواز کے گرفتار کیا گیا ہے اور انہیں رام باغ پولیس تھانے میں قید تنہائی میں رکھا گیا ہے۔خاتون رہنما بہت زیادہ علیل ہیں اور انہیں مصنوعی طریقے سے آکسیجن پہنچایا جارہا ہے۔انہوں نے کہاکہ ایسی حالت میں انہیں حراست میں رکھنا انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے کیونکہ موصوفہ کو ضروری علاج دستیاب نہیں ہوسکتا ہے۔سید علی گیلانی نے تحریک حریت کے رہنما محمد رستم بٹ کے علیل ہونے پر بھی سخت تشویش کا اظہار کیا اور انسانی حقوق کے اداروں سے ان کی رہائی میں مدد کرنے کی اپیل کی ہے ۔ محمدرستم کو 13مئی کو ایس ایم ایچ ایس اسپتال سرینگر چیک اپ کے لیے لایا گیا تھا، جہاں ڈاکٹروں نے انہیں فوری طور سرجری کرانے کا مشورہ دیا ہے لیکن موصوف کو اسپتال میں داخل نہیں کرایا گیا اور پولیس انہیں زبردستی دوبارہ ڈسٹرکٹ جیل کپواڑہ لے گئی ہے۔ سید علی گیلانی نے کہاکہ محمد رستم ایک طرف ذیابیطس، بلڈ پریشر اور پراسٹیٹ کا حُجم بڑھنے جیسے امراض کے شکار ہیں اور دوسری طرف ان کے پتے میں انفیکشن ہے۔ ڈاکٹروں کے مطابق ان کی فوری طور پر سرجری نہ کی گئی تو یہ انتہائی خطرناک ثابت ہوسکتا ہے۔ سید علی گیلانی نے خبردار کیا کہ آسیہ اندرابی اور محمد رستم بٹ کو دوران حراست کوئی گزند پہنچی تو اس کے سنگین نتائج برآمد ہوں گے اور اس کے لیے کٹھ پتلی انتظامیہ ذمہ دار ہوگی۔ حریت چیئرمین نے ایمنسٹی انٹرنیشنل، عالمی ریڈکراس کمیٹی اور انسانی حقوق کے مقامی اور بین الاقوامی اداروں سے اپیل کی ہے کہ وہ کشمیری نظربندوں اور خاص طور سے علیل قیدیوں کی حالتِ زار کا سنجیدہ نوٹس لیں اور ان کی فوری رہائی کے لیے اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے بھارت پر دباؤ ڈالیں۔#/s#

مزید :

عالمی منظر -