واسا کا واٹر ’’رمضان پیکج‘‘86جنریٹر کرائے پر لے لئے ، سحروافطار میں ہر صورت پانی ملے گا

واسا کا واٹر ’’رمضان پیکج‘‘86جنریٹر کرائے پر لے لئے ، سحروافطار میں ہر ...

  

لاہور (جاوید اقبال سے) واسا نے رمضان المبارک کے لئے واٹر رمضان پیکج جاری کر دیا ہے۔ جس کے تحت سحری اور افطاری سے 2 گھنٹے قبل شہر بھر میں 525 ٹیوب ویلز چلائے جائیں گے۔ لوڈ شیڈنگ کے دوران ٹیوب ویلز چلانے کے لئے 86 نئے جنریٹرز کرائے پر حاصل کرلئے گئے ہیں، جو ایک ہفتے کے اندر ٹیوب ویلوں پر لگائے جائیں گے۔ ٹیوب ویلوں کی مانیٹرنگ کے لئے ڈائریکٹر ایڈمن محمود احمد بھٹی کی سربراہی میں کمیٹی قائم کر دی گئی ہے جو سحری اور افطاری کے وقت ٹیوب ویل چلائے جانے کے احکامات پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں گے جو اپنی سربراہی میں ہر ٹاؤن کی سطح پر ایک ٹیم تشکیل دیں گے جس کے سربراہ ڈائریکٹرز ہوں گے۔ ان احکامات پر عملدرآمد نہ کرنے والے ایس ڈی اوز کو معطل کر دیا جائے گا۔ اس سلسلے میں منیجنگ ڈائریکٹر واسا عبدالقدیر خاں نے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ اس حوالے سے ایم ڈی واسا نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک کے دوران پانی کی شہریوں کو وافر مقدارمیں فراہمی کو یقینی بنایا گیا ہے۔ اس کے لئے میں نے احکامات جاری کر دئیے ہیں کہ سحری سے دو گھنٹے قبل اور افطاری سے ایک گھنٹہ قبل ہر ٹیوب ویل چالو رکھا جائے گا اور اس میں لوڈشیڈنگ کے توڑ کے لئے ایسے علاقے جہاں پانی کی شدید کمی ہے وہاں پانی کی فراہمی کے لئے 86 نئے ہیوی جنریٹرز کرایہ پر حاصل کر لئے گئے ہیں جو ان علاقوں کے ٹیوب ویلوں پر لگائے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ شہریوں کے لئے واٹر رمضان پیکیج ہے جو واسا کی طرف سے جاری کیا گیا ہے۔ اس پیکیج پر سختی سے عملدرآمد کروایا جائے گا اس کی مانیٹرنگ ڈائریکٹر ایڈمن کریں گے ۔ ایسے ایس ڈی اوز جو اس نوٹیفکیشن پر عملدرآمد نہ کروا سکے انہیں معطل کر دیا جائے گا۔ ایکسیئن اور ڈائریکٹرز کو شوکاز دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ہم رمضان المبارک کے دوران چار گھنٹے روزانہ اوقات کار سے زائد ٹیوب ویلز چلائیں گے ۔ ایسے علاقے جہاں پانی کی کمی ہو گی وہاں عارضی بنیادوں پر پانی کی کمی کو دور کرنے کے لئے 40 کے قریب واٹر ٹینکرز ہنگامی ہنگامی بنیادوں پر الرٹ رہیں گے اور یہ ٹینکرز 24 گھنٹے شہریوں کے لئے میسر ہوں اور ٹینکروں کے ذریعے پانی فراہم کیا جائے گا۔ عبدالقدیر خاں نے کہا کہ پانی کی فراہمی میں کوتاہی کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس تمام عمل کی مانیٹرنگ کے لئے مرکزی شکایات سیل ایم ڈی آفس میں قائم کیا گیا ہے جس کی مانیٹرنگ میں خود کروں گا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -