انتخابی اصلاحات کے جامع قانون کو حتمی شکل دیئے جانے کا امکان

انتخابی اصلاحات کے جامع قانون کو حتمی شکل دیئے جانے کا امکان

  

اسلام آباد(آئی این پی)پارلیمانی انتخابی اصلاحات سے متعلق جامع قانون کو آئندہ ہفتے حتمی شکل دیئے جانے کا قوی امکان ہے ، سب کمیٹیوں کی رپورٹ توثیق کیلئے پیش کی جائیں گی ۔ یہ سب کمیٹیاں وزیرقانون زاہد حامد اور آفتاب احمد خان شیرپاؤ کی سربراہی میں قائم ہیں ۔ مرکزی کمیٹی کا اجلاس کل 16مئی کو پارلیمنٹ ہاؤس میں کمیٹی کے چیئرمین وزیرخزانہ سینیٹر اسحاق ڈار کی صدارت میں ہوگا ۔ ذرائع کے مطابق سینیٹ انتخابات سے متعلق اصلاحات پر عدم اتفاق رائے کے علاوہ دیگر تمام انتخابی اصلاحات کی متفقہ طورپرمنظوریدے دی گئی ہے ۔ اس حوالے سے جامع انتخابی قانون کے مسودہ تیار کیا گیا ہے ۔ ان میں انتخابی فہرستیں ،پولنگ اسٹیشنوں ، نگران حکومتوں ، انتخابی ٹائم فریم ، بروقت انتخابی عملے کی تقرری ، نگران حکومتوں کے اراکین کی نامزدگی ، خواتین کی نشستوں ، انتخابی حلقوں میں ووٹ ڈالنے کا شرح تناسب، الیکشن کمیشن کو مالیاتی اور انتظامی طورپر مکمل بااختیار بنانے ، سمندر پار پاکستانیوں کو رائے شماری کا حق دینے ، بائیو میٹرک و الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کی بنیاد پر انتخابات کرانے اور انتخابات کے شیڈول کے آنے سے پانچ ماہ قبل انتخابی سکیموں اور پولنگ اسٹیشنوں کو حتمی شکل دینے جیسی اہم اصلاحات شامل ہیں ۔ آئندہ ہفتے قومی اسمبلی سے مجوزہ قانون کی منظوری کا قوی امکان ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -