مصباح الحق جاتے جاتے تاریخ رقم کر گئے ،پاکستان نے ویسٹ انڈیز میں پہلی بار ٹیسٹ سیریز جیت لی

مصباح الحق جاتے جاتے تاریخ رقم کر گئے ،پاکستان نے ویسٹ انڈیز میں پہلی بار ...

  

ڈومینیکا(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان نے تیسرے ٹیسٹ میچ میں ویسٹ انڈیز کو 101رنز سے ہرا کر جہاں ٹیسٹ سیریز 2،ایک سے جیت لی وہیں گرین شرٹس نے کالی آندھی کو ان ہی کی سرزمین پر پہلی بار شکست دے کر 60سالہ ریکار ڈ توڑ کر تاریخ رقم کر دی ،جبکہ مصباح الحق پا کستان ہی نہیں ایشیاء کے کامیاب ترین کپتان بن گئے ،وہ قومی ٹیم کی قیادت کرتے ہوئے کیرئیر میں 11ٹیسٹ سیریز میں فاتح رہے۔یاست شاہ کو عمدہ باؤلنگ کر مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔ تاریخی فتح پر قومی ٹیم کے کھلاڑیوں نے کپتان مصباح اور محمد یونس کو کندھوں پر اٹھا لیا اورسبز ہلالی پرچم لہراتے ہوئے پورے گراؤنڈ کا چکر لگا کر شائقین سے دادلینے سمیت انکا شکریہ ادا کیا ۔اس موقع پر میڈیا سے گفتگو میں مصباح الحق نے ٹیم کی بہترین پرفارمنس اور انہیں تاریخی فتح دلانے پر خراج تحسین پیش کیا ،انکا کہنا تھا تاریخ میں محمد یونس کے نام کیساتھ میرا نام بھی آئے گا اس پر فخر ہے ، انکا کہنا تھا ہر چیز کا ایک انجام ہوتا ہے میں نے اپنے کیرئیر کو انجوائے کیا ۔تفصیلات کے مطابق ڈومینیکا کے ونڈسر پارک میں کھیلے گئے تیسرے اور ااخری ٹیسٹ میچ میں پاکستان نے میزبان ٹیم کو جیتنے کیلئے 304 رنز کا ہدف دیا جس کے جواب میں ویسٹ انڈیز کی پوری ٹیم 202 رنز پر پویلین لوٹ گئی۔ ہدف کے تعاقب میں میزبان ٹیم کی جانب سے روسٹن چیز نے بھرپور مزاحمت کرتے ہوئے سنچری مکمل کی اور 101 رنز کے ساتھ ناٹ آؤٹ رہے جبکہ دیگر کھلاڑیوں میں کوئی خاطرخواہ کارکردگی پیش نہ کرسکا۔ڈومینیکا ٹیسٹ کے پانچویں دن کے کھیل کا آغاز ہوا تو ویسٹ انڈیز نے 7 رنز ایک کھلاڑی آؤٹ سے اپنی نامکمل اننگز کا آغاز کیا، بریتھ ویٹ 3 رنز کیساتھ کریز پر موجود تھے لیکن وہ زیادہ دیر کریز پر نہ ٹھہر سکے اور 6 رنز بنانے کے بعد 22 کے مجموعی اسکور پر یاسر شاہ کا شکار بن گئے۔ تیسری وکٹ پر شیمرون ہتمیر اور شائی ہوپ نے محتاط انداز میں کھیلتے ہوئے 25 رنز کی شراکت قائم کی اور ٹیم کا مجمو عی اسکور 47 تک پہنچا تو شمرون 25 رنز بنا کر محمد عامر کی گیند پر بولڈ ہوگئے جبکہ شائی ہوپ 17 وشال سنگھ اور شین ڈورچ 2،2 رنز بنا کر آؤ ٹ ہوئے۔ساتویں وکٹ پر روسٹن چیز اور کپتان جیسن ہولڈر نے ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے 58 رنز کی شراکت قائم کی اور ٹیم کا مجموعہ 151 تک پہنچا تو ہولڈر 22 رنز بنا کر حسن علی کا شکار بن گئے جس کے بعد نئے آنیوالے بلے باز دوندرا بشو3، الزاری جوزیف 5 اور شینن گیبرئیل 4 رنز کے مہمان ثابت ہوئے۔ پاکستان کی جانب سے یاسر شاہ نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کیا اور 5 وکٹیں حاصل کیں اور مین آف دی میچ قرار پائے ، جبکہ حسن علی نے 3، محمد عامر اور محمد عباس نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔واضح رہے پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں اظہرعلی کی سنچری، کپتان مصباح الحق، بابراعظم اور سرفراز احمد کی نصف سنچریوں کی بدولت 367 رنز بنائے جبکہ دوسری اننگز میں قومی ٹیم نے 8 وکٹوں پر 174 رنز بنا کر اننگز ڈکلیئر کردی تھی۔ میزبان ویسٹ انڈیز کی ٹیم پہلی اننگز میں 247 رنز بنا سکی تھی۔

مزید :

صفحہ اول -