انسان سونگھنے میں جانور سے بھی تیز ہے،نئی تحقیق میں انکشاف

انسان سونگھنے میں جانور سے بھی تیز ہے،نئی تحقیق میں انکشاف
 انسان سونگھنے میں جانور سے بھی تیز ہے،نئی تحقیق میں انکشاف

  

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک)ویسے یہ کہا جاتا ہے کہ کئی جانوروں میں سونگھنے کی صلاحیت انسان سے کہیں زیادہ ہوتی ہے، خصوصی طور پر چوہوں اور کتوں کو اس حوالے سے زیادہ شاطر مانا جاتا ہے۔اور یہ 2 دن قبل تک حقیقت بھی تھی، کیوں کہ 19 صدی کے آغاز میں فرانسیسی ماہر تشریح الاعضا پال بروشا نے کئی سال تک انسانوں اور جانوروں کے دماغ پر تحقیق کرنے کے بعد یہ نتیجہ اخذ کیا تھا کہ انسان میں سونگھنے کی صلاحیت جانور سے کم ہے۔مگر ایک حالیہ تحقیق سے پتہ چلا ہے کہ 19 ویں صدی کی تحقیق کا آج کی حقیقت سے کوئی تعلق نہیں، انسان میں سونگھنے کی صلاحیت جانوروں سے زیادہ ہے۔سائنس میگ جرنل میں شائع ایک حالیہ رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست نیوجرسی کی رٹگرز یونیورسٹی کے نیورو بائیولاجسٹ جوہن مک گین کی جانب سے کی گئی انسانی دماغ اور چوہوں سمیت دیگر جانوروں کے دماغ پر کی جانے والی تحقیق سے پتہ چلا کہ انسان میں سونگھنے کی صلاحیت زیادہ ہے۔

انکشاف

مزید :

صفحہ اول -