سپریم کمانڈر حزب المجاہدین نے کشمیر میں بھارت کے خلاف ریاست گیر جہاد کا اعلان کردیا

سپریم کمانڈر حزب المجاہدین نے کشمیر میں بھارت کے خلاف ریاست گیر جہاد کا ...
سپریم کمانڈر حزب المجاہدین نے کشمیر میں بھارت کے خلاف ریاست گیر جہاد کا اعلان کردیا

  

کراچی(آن لائن)سپریم کمانڈر حزب المجاہدین سید صلاح الدین نے کشمیر میں بھارت کے خلاف ریاست گیر جہاد کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ہم مذاکرات کے حامی ہیں، بھارت کسی صورت مذاکرات نہیں چاہتا ،اس لئے اب مزید وقت ضائع نہیں کیا جاسکتا۔

تفصیلات کے مطابق سید صلاح الدین کا جماعت اسلامی کراچی کے مرکز ادارہ نورحق میں کشمیر کی موجودہ صورتحال پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کشمیری عوام 69سال سے بھارتی غاصبانہ قبضے کے خلاف جدوجہد کررہی ہے،ہماری تحریک پرامن تھی لیکن بھارت نے پرامن جدوجہد پر بھی مظالم کے پہاڑ توڑے جبکہ بھارتی افوج اب تک 5لاکھ 25ہزار سے زائد کشمیریوں کو شہید کرچکی ہیں اورحالیہ بھارتی مظالم نے تمام ریکارڈ توڑدئے ہیں۔صرف اتوار کے روز 169نہتے معصوم شہریوں کو شہید کیا گیا،اس وقت 13ہزار سے زائد بیگناہ کشمیری پابند سلاسل ہیں۔انہوں نے کہا کہ برہان مظفر وانی کی شہادت نے تحریک آزادی کشمیر کو ایک نئی جہت دی ہے اورکشمیر کا بچہ بچہ بھارتی قابض افواج کے خلاف جدوجہد کررہا ہے جبکہ بھارتی سپریم کورٹ کی اجازت سے قابض افواج پیلٹ گن کا استعمال کررہی ہے،جس سے نہتے کشمیریوں کی آنکھیں ضائع ہورہی ہیں اورپیلٹ گن کے استعمال سے اب تک 16ہزار سے زائد کشمیری زخمی ہوچکے ہیں۔دنیا کے کسی ملک میں مظاہرین پر پیلٹ گن کا استعمال نہیں ہوتا۔ بھارت نے اپنے پورے وسائل بروئے کار لاتے ہوئے حریت رہنماوں کو خریدنے کی ہر ممکن کوشش کی لیکن وہ اس میں ہمیشہ ناکام رہا اوراب بھارت نے کشمیر پر معاشی بدحالی مسلط کرنے کی کوشش شروع کردی ہے ، دوسری طرف بھاتی فوج جنگلات کاٹ رہی ہے۔معدنیات کو لوٹا جارہا ہے جبکہ سیاحت کو تباہی کے دہانے پر پہنچادیا گیا ہے۔

وہ جگہ جہاں شادی سے پہلے باپ اپنی بیٹی کی چھاتیوں پر تھوکتا ہے، یہ قبیح حرکت کیوں کی جاتی ہے؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

سپریم کمانڈر حزب المجاہدین کا کہنا تھا کہ بھارت چاہتا ہے کشمیری بدحالی کاشکار ہوجائیں اور بالآخرتھک ہار کر بھارتی قابض افواج کے خلاف جدوجہد ترک کردیںلیکن بھارت نہیں جانتا کہ کشمیریوںکا اولین مقصد ہی آزادی ہے اورکشمیر کا ہر بچہ پکاررہا ہے کہ بھارتی فوجیوں واپس جاوجبکہ آخری بھارتی فوجی کی واپسی تک ہماری جدوجہد جاری رہے گی۔ میں پاکستانی اور کشمیری قیادت سے کہتا ہوں کہ مذاکرات کی کوششوں میں وقت ضائع نہ کریں کیونکہ بھارت مذکرات نہیں چاہتا۔ انہوں نے کہا کہ جب اقوام متحدہ میں میاں نواز شریف نے کشمیر کا مقدمہ پیش کیا اور برہان مظفر وانی کو تحریک آزادی کا مجاہد قراردیا،اس وقت بھارتی وزیر خارجہ سشماسوراج نے کشمیر کو متناذعہ ماننے سے ہی انکارکرتے ہوئے کہا تھا کہ جو علاقہ پاکستان کے پاس ہے اس پر مذاکرات ہوسکتے ہیں۔بھارتی ہٹ دھرمی نے اس کا اصلی چہرہ کئی بار بے نقاب کیا ہے جبکہ عالمی طاقتوں کے دوہرے معیار کے باعث اقوام متحدہ کی قراردادوںپر عمل درآمد نہیں ہورہا ہے۔اگر سوڈان کے عیسائیوں کی مدد کے لئے آوازیں بلند ہوسکتی ہیں تو کشمیریوں نے کونسا جرم کیا ہے کہ کوئی آواز تک نہیں اٹھاتا؟۔

سید صلاح الدین نے مزید کہا کہ سید علی گیلانی سے لیکرکشمیر کا آخری بچہ تک یہ فیصلہ کرچکا ہے کہ اب ریاست گیر جہاد کے سوا کوئی راستہ نہیں ہے،اس لئے اب مذاکرات کے نام پر مزید وقت ضائع نہیں کیا جاسکتا۔ تحریک آزادی کشمیر اب بہت آگے نکل چکی ہے اورتقاضے بڑھ چکے ہیں جبکہ ہم پاکستان کے ماضی کے کردار پر شکر گزار ہیںاور اب بھی ہمارا سہارا پاکستان ہے لیکن پاکستان بھی کھل کرہماری اخلاقی ،سیاسی اور سفارتی سپورٹ کرے۔ پاکستان کو سفارتی محاز پر بھرپور کردار اداکرنا ہوگا۔ہمارے ہر شہید کا لاشہ پاکستانی سبزہلالی پرچم میں لپٹا ہوتا ہے۔یہ کشمیریوں کی پاکستان سے محبت کا واضح ثبوت ہے۔اس موقع پر جماعت اسلامی کراچی کے رہنماءسید مظفر ہاشمی اور سید زاہد عسکری سمیت دیگررہنماءبھی موجود تھے۔

مزید :

قومی -