بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ کا سب سے زیادہ فائدہ ہم اٹھا رہے ہیں، پاکستان کی تنہائی کے خواب دیکھنے والا بھارت آج خود اکیلا ہو گیا: عثمان مجیب شامی

بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ کا سب سے زیادہ فائدہ ہم اٹھا رہے ہیں، پاکستان کی ...
بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ کا سب سے زیادہ فائدہ ہم اٹھا رہے ہیں، پاکستان کی تنہائی کے خواب دیکھنے والا بھارت آج خود اکیلا ہو گیا: عثمان مجیب شامی

  

بیجنگ (ڈیلی پاکستان آن لائن) صحافی و تجزیہ کار عثمان مجیب شامی نے کہا ہے کہ چین کے بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ سے سب سے زیادہ فائدہ پاکستان اٹھا رہا ہے، پاکستان کو سفارتی طور پر تنہا کرنے کے خواب دیکھنے والا بھارت آج خود تنہا ہو گیا ہے جبکہ پاکستان بیلٹ اینڈ روڈ فورم میں 65 ممالک کے درمیان کھڑا ہے۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے عثمان مجیب شامی کا کہنا تھا کہ بیلٹ اینڈ روڈ فورم میں 29 ممالک کے سربراہان اور 65 سے زائد ممالک کے نمائندے شریک ہیں۔ بھارت کی جانب سے دعویٰ کیا جاتا ہے کہ اس نے پاکستان کو دنیا بھر میں سفارتی طور پر تنہا کردیا ہے لیکن اس فورم میں پاکستان 65 ممالک کے ساتھ کھڑا نظر آ رہا ہے جبکہ بھارت تنہائی کا شکار ہو چکا ہے، اس فورم نے پاکستان کے تنہا ہونے کے خیال کو یکسر مسترد کردیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ چینی صدر شی چن پنگ نے سلک روڈ منصوبے کیلئے اضافی 15 بلین ڈالردینے کا اعلان کیا ہے جس کے بعد یہ منصوبہ 125 بلین ڈالر سے تجاوز کر گیا ہے۔ یہ دنیا میں جاری سب سے بڑے منصوبوں میں سے ایک ہے اور پاکستان اس کا سب سے زیادہ فائدہ اٹھانے والا ملک ہے کیونکہ سی پیک کے بغیر شی چن پنگ کے ویژن کی تکمیل ناممکن ہے۔

عثمان شامی کا کہنا تھا کہ چین میں جاری فورم میں پاکستان کے چاروں وزرائے اعلیٰ نے وزیر اعظم کے ہمراہ بھرپور شرکت کی اور ایک دوسرے کے ساتھ خوشگوار ماحول میں وقت گزارا۔ بیجنگ میں نیا پاکستان بنتا دیکھ رہے ہیں جہاں تمام جماعتیں سیاسی اختلافات بھلا کر ملکی ترقی کیلئے ایک ساتھ کھڑی نظر آ رہی ہیں۔ ایم ایل ون ریلوے لائن کا فریم ورک معاہدہ طے پاگیا ہے جبکہ گوادر ایکسپریس وے پر 19 کلومیٹر طویل موٹروے کیلئے گرانٹ جاری کرنے کی منظوری بھی دے دی گئی ہے۔

ان کا کہنا تھا عام تاثر یہ پایا جاتا ہے کہ شاید چین ہمیں لوٹنا چاہتا ہے لیکن یہ سلسلہ پاکستان تک محدود نہیں ہے بلکہ دنیا کے دیگر ممالک کے ساتھ بھی انہی شرائط پر معاہدے کیے جا رہے ہیں جن پر پاکستان کے ساتھ ہو رہے ہیں ۔ چین کے ون بیلٹ اینڈ ون روڈ منصوبے میں شامل ہونے سے سب سے زیادہ فائدہ پاکستان کو حاصل ہوگا کیونکہ اس سے پوری دنیا میں ایک رابطہ پیدا ہوگا اور پاکستان کے بھی دنیا سے روابط بڑھیں گے۔ امریکہ دنیا کی لیڈر شپ کا کردار کھو رہا ہے اور مغربی دنیا چین میں جاری اس فورم کو دیکھ رہی ہے کہ چین دنیا کی قیادت سنبھال رہا ہے۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -