گنگال ہونے کا رونا رونے والوں کے دنیا بھر میں کارخانے کہاں سے آئے,کرپٹ عناصر غلاف کعبہ میں بھی چھپ جائیں ان کا احتساب ہونا چاہئے : سراج الحق

گنگال ہونے کا رونا رونے والوں کے دنیا بھر میں کارخانے کہاں سے آئے,کرپٹ عناصر ...
گنگال ہونے کا رونا رونے والوں کے دنیا بھر میں کارخانے کہاں سے آئے,کرپٹ عناصر غلاف کعبہ میں بھی چھپ جائیں ان کا احتساب ہونا چاہئے : سراج الحق

  

سرگودھا(ڈیلی پاکستان آن لائن) امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ کرپٹ عناصر اگر غلاف کعبہ کے پیچھے بھی چھپ جائیں ان کا احتساب ہونا چاہئے، ایک خاندان کنگال ہونے کا رونا رو رہا ہے مجھے سمجھ نہیں آرہی کہ ان کے دنیا بھر میں کارخانے کہاں سے آگئے،غریب کو دو ہزار بجلی کا بل جمع نہ کروانے پر پکڑ لیا جاتا ہے مگر قومی سلامتی کے مجرموں کو کھلی چھوٹ ملی ہوئی ہے۔ اگر عدالتوں سے انصاف نہ ملا تو کرپشن کے خلاف لڑائی چوکوں اور چوراہوں میں ہوگی۔جماعت اسلامی کی کرپشن کے خلاف جاری جد وجہد کو منتقی انجام تک پہنچا کر دم لیں گے۔

پاکستان کی سالمیت کا مسئلہ عالمی عدالت انصاف کے دائر ہ کار میں نہیں ، کلبھوشن کا معاملہ ہنگامی نوعیت کا نہیں، یہ مقدمہ عالمی عدالت انصاف میں نہیں چلایا جا سکتا، : عالمی عدالت انصاف میں پاکستان کی تین دلیلیں

سرگودھا میں محبت رسول ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے مطالبہ کیا ہے کہ نیب کے سربراہ کا تقرر اپوزیشن اور حکومت نہیں بلکہ نیب کے سربراہ کا تقرر چیف جسٹس آف پاکستان اور چاروں صوبائی چیف جسٹس صاحبان مل کرکریں، ملک میں احتساب کا کڑا نظام بنایا جائے۔احتساب کا ایسا نظام بنایا جائے کہ پرویز مشرف، پیپلز پارٹی اورموجودہ حکمرانوں کا بھی احتساب کیا جائے۔ جنہوں نے قوم کو لوٹا ہے اگر وہ غلاف کعبہ میں بھی چھپ جائیں تو ان کا احتساب ہونا چاہیے۔ قوم حکمرانوں کے خلاف بیدار ہورہی ہے اور اب ان کا جانا ٹھہر گیا ہے صبح گیے یا شام گیے۔پاکستان اور کرپشن اب ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے۔

دہشت گردوں سے گھبرانے والے نہیں، کلبھوشن جاسوس نہیں تو مسلمان نام سے پاسپورٹ بنوا کر پاکستان کیا لینے آیا، یادیو نے پاکستان کو نقصان پہنچانے کا اعتراف کیا تھا، اعترافی ویڈیو سب کے سامنے ہے: عالمی عدالت انصاف میں پاکستان کا مئوقف

سینیٹر سراج الحق کا مزید کہنا تھا کہ موجودہ جمہوری نظام منافقت کا نظام ہے جس میں غریب کے لیے کوئی خیر کا پہلو نہیں ہے۔ پاناما کیس میں حکمرانوں نے کئی وکیل تبدیل کیے لیکن خود کو کلئیر کرنے میں ناکام رہے پانچ سو اڑتالیس صفحات میں ایک لائن بھی ان کے حق میں نہیں۔ جے آئی ٹی کے نتیجے میں حکمران خاندان کو ساٹھ دن کی عبوری ضمانت ملی ہے۔ پانامہ لیکس پر ساری دنیا میں فیصلے ہوگئے لیکن ہم جے آئی ٹی میں پھنس گئے۔ پانامہ لیکس میں دنیا بھر میں جن حکمرانوں کے نام آئے ہیں وہ رضاکارانہ اقتدار سے الگ ہوگئے لیکن ہمارے وزیراعظم ابھی تک اقتدار سے چمٹے ہوئے ہیں۔ پوری قوم ان سے مطالبہ کر رہی ہے کہ وہ کرسی چھوڑ دیں تاکہ وہ تحقیقات پر اثر انداز نہ ہوسکیں لیکن ان پر کوئی اثر نہیں ہوتا۔ ہماری خواہش ہے کہ ایوان میں ایسے لوگ منتخب ہوکرجائیں جوچوروں، ڈاکوں کا راستہ روکیں۔ ملک میں ووٹ سے ہی تبدیلی آئے گی عوام اپنا رویہ بدلیں اور چوروں سے ملک کو نجات دلائیں۔

ون بیلٹ ون روڈ درحقیقت انسانیت کیلئے نئے دور کا آغاز ،آپسی تعلقات مضبوط کرنے اور ترقی کا جائزہ لینے کا بہترین موقع ہے : وزیراعظم نوازشریف

امیر جماعت اسلامی کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نے بین الاقوامی طور پر قوم کو تنہا کردیا ہے۔ آج بھارت سے تو دوستی ہے لیکن ایران و افغانستان کے ساتھ تعلقات خراب ہیں۔ ہم ایسے نظام سے بغاوت کا اعلان کرتے ہیں جو ظلم وجبر پر مبنی ہے۔ آئی ایم ایف اور ورلڈبنک پر مبنی نظام کو نہیں مانتے۔

توہین عدالت ، کویت میں شاہی خاندان کے فرد سمیت3افراد کو 5سال قید کی سزادی گئی

سرگودھا کے عوام سے مخاطب ہوتے ہوئے سراج الحق کا کہنا تھا کہ میں سرگودھا کی عوام کے پاس بڑی امید لے کرآیا ہوں۔ ملک میں نہ پٹوار خانہ بدلا نہ انگریز کا نظام بدلا، بدلا تو حکمرانوں کا خزانہ بدلا۔ انہوں نے عوام سے کہاکہ روشن مستقبل کے لیے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ جماعت اسلامی ملک میں شریعت اور قانون کی حکمرانی چاہتی ہے۔ جماعت اسلامی نے کرپشن کے خلاف مہم کا آغاز کیا اور ہم ہی اس کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے۔

مزید :

قومی -