راؤ انوار سمیت دیگر ملزموں پر 19مئی کو فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ

راؤ انوار سمیت دیگر ملزموں پر 19مئی کو فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ

کراچی(سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) انسداد دہشتگردی کی عدالت نے نقیب اللہ قتل کیس میں ملزمان پر آئندہ سماعت پر فرد جرم عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔کراچی کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں نقیب اللہ قتل کیس کی سماعت ہوئی جس سلسلے میں مرکزی ملزم راؤ انوار اور ڈی ایس پی قمر احمد سمیت دیگر ملزمان کو عدالت میں پیش کیا گیا۔پولیس راؤ انوار کو وی آئی پی پروٹوکول میں بکتر بند میں عدالت لائی اور درجنوں ا ہلکاروں و ا فسر ان نے ملزم کو سکیورٹی فراہم کی۔سماعت کے دوران مدعی مقدمہ کے وکیل نے ملتان لائن میں راؤانوار کی رہائشگاہ کوسب جیل قرار د ینے پر اعتراضات جمع کرائے جبکہ ملزمان کو مقدمے کی نقول فراہم کی گئیں جس پر انہوں نے نقول نامکمل ہونے کی نشاندہی کی۔ملزمان کے ا عتر ا ض پر عدالت نے آئندہ سماعت پر ملزمان کے وکلاء کو مکمل دستاویزات فراہم کرنے کی ہدایت کی۔دوران سماعت عدالت نے ریما ر کس د یئے آئندہ سماعت پر ملزمان پر فرد جرم عائد کی جائے گی جبکہ عدالت نے کیس کی مزید سماعت 19 مئی تک ملتوی کردی۔علاو ازیں پو لیس کی جانب سے راؤ انوار کیخلاف جعلی مقابلے کا چالان بھی عدالت کو موصول ہوگیا ہے جس میں راؤ انوار اور ڈی ایس پی قمر کو گرفتار ظا ہر کیا گیا ہے۔چالان کے مطابق ملزمان نے نقیب و دیگر کو جعلی پولیس مقابلے میں قتل کیا، دوران تفتیش یہ پولیس مقابلہ جعلی ثابت ہو چکا ہے ۔ پو لیس چالان میں مدعی مقدمہ اور ایس ایس پی سینٹرل سمیت 28 گواہوں کے نام شامل ہیں۔دوسری جانب کیس کے تفتیشی افسر ڈاکٹر ر ضو ان نے عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہاراؤ انوار کو سب جیل میں رکھنے کا اختیارحکومت کے پاس ہے، ہم نے حکومتی احکامات پر عملدرآمد کرایا ہے۔ تفتیشی افسر کی تبدیلی کا فیصلہ اعلیٰ حکام کریں گے، ملزمان کو مقدمے کی نقول فراہم کردی ہیں۔ڈاکٹر رضوان نے امید ظاہر کی کہ مفرور ملزمان کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔

نقیب قتل کیس

مزید : صفحہ آخر