اسلامیہ یونیورسٹی،سکیورٹی گارڈ کے طالبعلم پر تشدد کیخلاف احتجاج،کلاسز کا بائیکاٹ

اسلامیہ یونیورسٹی،سکیورٹی گارڈ کے طالبعلم پر تشدد کیخلاف احتجاج،کلاسز کا ...

بہاول پور (بیورورپورٹ ) اسلامیہ یونیورسٹی کے سیکورٹی گارڈ کا طالبعلم پر تشدد کے خلاف طلباء کا شدید احتجاج تمام کلاسسز کا بائیکاٹ ۔احتجاج کی کوریج کرنے پر یونیورسٹی کے گارڈز کی صحافیوں کے ساتھ بدتمیزی یونیورسٹی کے اندر داخل ہونے سے روک دیا ۔تفصیل کے مطابق گزشتہ دنوں سوشیالوجی ڈیپارٹمنٹ کے طالبعلم ناظم حسین کو سیورٹی گارڈ نے تشدد کا نشانہ بنایا تھا طلباء کے احتجاج پر یونیورسٹی (بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

نے واقعہ کی تحقیقات کے لیے تین دن کا وقت مانگا مقررہ وقت گزر جانے کے باوجود تشدد کرنے والے سیکورٹی گارڈز کے خلاف کاروائی نہ ہونے پر تمام ڈیپارٹمنٹ کے طلباء نے کلاسسز کا بائیکاٹ کرتے ہوئے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف احتجاج مظاہرہ کیا جس کو روکنے کے لیے سیکورٹی گارڈ کی بھاری نفری طلب کر لی گئی اور یونیورسٹی کے گیٹ بند کردیئے گئے مظاہرین طلباء نے اس موقع پر وائس چانسلر پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا اسٹڈی کے طالب علم وقار چوہدری کو جب وہ اپنی کلاس میں بیٹھا تھا وائس چانسلر کی ہدایت پر سادہ کپڑوں میں ملبوس سیکورٹی گارڈز نے اغوا کیا اور تششد کا نشانہ بنایا انہوں نے کہا کہ ابھی گزشتہ واقعہ پر ہمیں انصاف نہیں ملا اور آج یہ دوسرا واقعہ ہو گیا ہے مظاہرین نے کہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے اس بات کی تحریری گارنٹی دی جائے کہ مستقبل میں سیکورٹی گارڈز کی جانب سے ایسی دہشتگردی نہیں کی جائے گی انہوں نے واقعہ میں ملوث سیکورٹی سپروائزر طاہر،گارڈز شہباز اور نصیر بابر کو فوری طور پر برطرف کرنے اور طلباء کو ڈیپارٹمنٹ کی پارکنگ تک رسائی دینے کا مطالبہ کیا بعدازاں یونیورسٹی انتظامیہ کی تین روز میں تحقیقات اور کاروائی کی یقین دہانی پر طلباء نے احتجاج ختم کر دیا ۔

اسلامیہ یونیورسٹی احتجاج

مزید : صفحہ اول /ملتان صفحہ آخر