کوہاٹ میں ویلج کونسل خادی زئی ناظم کے سامنے محکمہ بلدیات نے ہتھیار ڈال دیئے

کوہاٹ میں ویلج کونسل خادی زئی ناظم کے سامنے محکمہ بلدیات نے ہتھیار ڈال دیئے

کوہاٹ (بیورورپورٹ)ویلج کونسل خادی زئی ناظم کے سامنے محکمہ بلدیات نے ہتھیار ڈال دیئے تین سال سے کونسل کا ایک بھی اجلاس طلب نہ کرنے والے ویلج کونسل خادی زئی ناظم کے خلاف محکمہ بلدیات و دیہی ترقی کوئی کارروائی نہ کر سکا جبکہ ناظم اور اراکین کونسل کے مابین مصالحت کے لیے ڈائریکٹر بلدیات کی کوشش بھی رائیگاں گئیں 2015 میں بلدیاتی انتخابات کے بعد ویلج کونسل خادی زئی ناظم سید نجم الحسن شیرازی منتخب کر لیے گئے اور آج تک ایک بھی اجلاس بطور کنوینئر طلب نہ کر سکے ویلج کونسل میں اراکین کی کل تعداد 10 ہے جس میں سات جنرل کونسلرز 2 خواتین ایک مزدور کسان شامل ہیں جبکہ یوتھ کونسلر کی سیٹ فوتگی کی وجہ سے خالی پڑی ہے اراکین کونسل اپنے اپنے گاؤں میں ویلج کونسل آفس قائم کرنے کے لیے اس وقت دو دھڑوں میں تقسیم ہو چکے ہیں تین جنرل کونسلرز اور دو خواتین آفس خادی زئی جبکہ بشمول ناظم چار جنرل کونسلرز اور ایک کسان کونسلر میٹھا خان میں آفس قائم کرنے پر بضد ہے دھڑوں میں برابر تقسیم کے باعث تین سالوں میں ایک مرتبہ بھی بجٹ پاس نہیں کرایا جا سکا ناظم کے خلاف کونسلرز نے سب سے پہلے ضلع کوھاٹ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ کو شکایت درج کروائی اور اس کے بعد ڈی جی بلدیات سمیت لوکل گورنمنٹ کمیشن میں بھی درخواستیں جمع کرائی جا چکی ہیں تاہم آج تک اس مسئلے کا کوئی حل نہیں نکالا جا سکا ہے اس حوالے سے جب ویلج کونسل خادی زئی ناظم سید نجم الحسن شیرازی سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے منتخب ممبران اسمبلی اور پی ٹی آئی ڈسٹرکٹ کونسلر علی زئی پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ ہمارا آفس سیاسی چپقلش کی وجہ سے بند پڑا ہے آفس کا قیام ناظم کی صوابدید پر ہوتا ہے اور عدالت نے بھی ہمارے حق میں فیصلہ دیا ہے اور اسی پی ٹی آئی حکومت نے لوکل گورنمنٹ ایکٹ 2014 میں وی سی ناظم کو بہت سے اختیارات دیئے ہیں لیکن ہمارے ویلج کونسل خادی زئی میں سیاسی چپقلش کی وجہ سے ہمیں محروم کیا گیا ہے اگر ہماری وی سی کو کوئی نقصان یا ختم کرنے کی کوشش کی گئی تو قوم اور عوام ہمارے ساتھ ہے آئندہ لائحہ عمل تیار کر کے آگے بڑھیں گے اس کے بعد اے ڈی بلدیات کوھاٹ کاشف الرحمن سے رابطہ کرنے کے بعد انہوں نے کہا کہ مصالحت کے لیے 42 سے زائد جرگے کر چکے ہیں خود ڈپٹی کمشنر اور ڈائریکٹر جنرل لوکل گورنمنٹ نے بھی کوشش کی ہے تاہم اراکین ٹس سے مس نہیں ہو رہے ہیں انہوں نے کہا کہ کوششیں آگے بھی کریں گے کہ اس مسئلے کا حل نکل آئے تاہم بہتر یہی ہو گا کہ علاقہ عوام کی تکلیف کو مدنظر رکھتے ہوئے اراکین کونسل خود اس کا حل تلاش کریں علاقہ عوام نے اس حوالے کہا ہے کہ سیاسی چپقلش کی وجہ سے عوام نقصان برداشت کر رہے ہیں اور دن بہ دن عوام کی مشکلات میں اضافہ ہو رہا ہے تین سال میں وی سی میں نہ صفائی ہوئی ہے اور نہ کوئی ترقیاتی کام ہوا ہے لہٰذا اس مسئلے کو جلد از جلد حل کیا جائے اور عوام کو احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...