’میں نے اس لڑکی کا ریپ کردیا کیونکہ مجھ سے۔۔۔‘ لندن میں نوجوان لڑکی کا ریپ کرنے والے پاکستانی نے ایسی وجہ بتادی کہ جان کر جج کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

’میں نے اس لڑکی کا ریپ کردیا کیونکہ مجھ سے۔۔۔‘ لندن میں نوجوان لڑکی کا ریپ ...
’میں نے اس لڑکی کا ریپ کردیا کیونکہ مجھ سے۔۔۔‘ لندن میں نوجوان لڑکی کا ریپ کرنے والے پاکستانی نے ایسی وجہ بتادی کہ جان کر جج کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ گیا

  

لندن(نیوز ڈیسک) پاکستانی شہری محمد خرم درانی کی مجرمانہ ذہنیت کا اندازہ کیجئے کہ پہلے وہ غیر قانونی طور پر برطانیہ گیا اور پھر اوبر کا ڈرائیور بن کر ایک نوجوان خاتون کی عصمت دری کر ڈالی۔ اس بے حیا شخص سے جب عدالت میں پوچھا گیا کہ یہ جرم کیوں کیا تو کہنے لگا ”میں خود کو کنٹرول نہیں کر پایا تھا۔“

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ویب سائٹ ’ورلڈ وائڈ وئیرڈ نیوز‘ کے مطابق 38 سالہ خرم درانی نے جنوبی لندن کے علاقے سے ایک 27 سالہ خاتون کو اپنی گاڑی میں بٹھایا اور اسے گھر ڈراپ کرنے کے لئے چل پڑا۔ جب اس نے دیکھا کہ خاتون نشے میں تھی تو اسے ہوس کا نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کرنے لگا۔ اس نے پہلے تو خاتون کو اس کے گھر کے سامنے اتاارا لیکن پھر دروازے سے ہی دبوچ کر واپس گاڑی میں لے آیا۔ گاڑی کی پچھلی سیٹ پر اس نے خاتون کا زیادتی کا نشانہ بنایا اور برہنہ حالت میں اس کی تصاویر بھی بنائیں۔

متاثرہ خاتون کی شکایت پر خرم درانی کے خلاف قانونی کاروائی کا آغاز کیا گیا۔ جب سائتھوارک کراﺅن کورٹ میں اس سے پوچھا گیا کہ یہ جرم کیوں کیا تو اس کا جواب تھا ”میں نے خاتون کی رضامندی سے اس کے ساتھ جسمانی تعلق استوار کیا۔ وہ میرے روکنے کے باوجود میرے ساتھ لپٹ رہی تھی جس پر میں خود کو کنٹرول نہیں کر پایا۔ مجھے یہ بھی محسوس ہوا کہ وہ اس تعلق سے لطف اندوز ہو رہی تھی۔“

عدالت نے اس شیطان صفت شخص کو خاتون پر جنسی حملے کے الزام میں آٹھ سال جبکہ عصمت دری کے جرم میں 12 سال قید کی سزا سنائی ہے۔ اسے جنسی مجرموں کے رجسٹر میں دستخط کرنے کا حکم بھی دیا گیا ہے جبکہ قید کی سزا مکمل ہونے پر اسے برطانیہ سے بے دخل کر دیا جائے گا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ