بڑے عرب اسلامی ملک نے اسرائیل پر میزائلوں کی بارش کردی، فیصلہ کن جنگ کا اعلان ہوگیا

بڑے عرب اسلامی ملک نے اسرائیل پر میزائلوں کی بارش کردی، فیصلہ کن جنگ کا اعلان ...
بڑے عرب اسلامی ملک نے اسرائیل پر میزائلوں کی بارش کردی، فیصلہ کن جنگ کا اعلان ہوگیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شدت پسند تنظیم داعش کو شکست ہونے کے باوجود شام کی صورتحال خطرناک تر ہوتی جا رہی ہے اور اب شام میں موجود ایرانی فوج نے اسرائیل کے خلاف ایسا اقدام کر ڈالا ہے جسے ایران کی طرف سے اسرائیل کے ساتھ فیصلہ کن جنگ کے اعلان سے تعبیر کیا جا رہا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق گزشتہ روز ایرانی فوج نے اسرائیل پر میزائلوں کی بارش کر دی۔ اس حملے میں شام کی حدود سے اسرائیل کے زیرقبضہ گولان کی پہاڑیوں میں 55میزائل فائر کیے گئے، تاہم ان سے ہونے والے نقصان کی تفصیل سامنے نہیں آ سکی۔

رپورٹ کے مطابق شام سے اسرائیل پر میزائل داغے جانے کا دعویٰ حزب اللہ کے رہنما سید حسن نصراللہ کی طرف سے کیا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ”شام سے اسرائیل پر میزائل حملے کے بعد شام کی جنگ نئے اور فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہو گئی ہے۔اس حملے سے ظاہر ہوتا ہے کہ شام اور اس کے اتحادی ملک ممکنہ اسرائیلی حملے سے شام کو بچانے کے لیے کسی بھی حد تک جا سکتے ہیں۔“ اسرائیل کی طرف سے بھی اس میزائل حملے کی تصدیق کر دی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ اس کی فوج نے اپنے آئرن ڈوم ڈیفنس سسٹم کے ذریعے 20میزائل مار گرائے۔اپنے بیان میں اسرائیل نے اس میزائل حملے کا ذمہ دار ایران کو قرار دیا ہے۔ واضح رہے کہ ایران اور اسرائیل کے مابین شام میں اس سے قبل بھی ایک دوسرے پر حملے کیے جا چکے ہیں۔ ایران ہی نے 1982ءمیں حزب اللہ تنظیم کی بنیاد رکھی تھی جو اس وقت شام میں صدر بشارالاسد کی حمایت میں لڑ رہی ہے۔

مزید : بین الاقوامی