پاکستانی حکومت نے چینی کمپنی کو ایسا شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑلیا کہ جان کر ہر پاکستانی پریشان ہوجائے گا

پاکستانی حکومت نے چینی کمپنی کو ایسا شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑلیا کہ ...
پاکستانی حکومت نے چینی کمپنی کو ایسا شرمناک کام کرتے رنگے ہاتھوں پکڑلیا کہ جان کر ہر پاکستانی پریشان ہوجائے گا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) ہمارے ہاں تو لوٹ مار کا ایسا بازار گرم ہے کہ ہر کوئی اس میں ملوث نظر آتا ہے البتہ چینیوں پر ہم بہت اعتماد کرتے تھے۔ افسوس کہ یہ اعتماد بھی بے جا نکلا کیونکہ اب ایک چینی کمپنی نے ہمارے ساتھ وہی کام کر دیا ہے جو پہلے صرف پاکستانی کمپنیاں کرتی تھیں۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

اخبار ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق پاکستانی کسٹمز حکام نے ساہیوال پاور پلانٹ کو کوئلہ فراہم کرنے والی ایک چینی کمپنی کی 1.2 ارب روپے ٹیکس چوری پکڑلی ہے، لیکن پاک چین اقتصادی راہداری سے متعلقہ حساسیت کی وجہ سے حکام اس کمپنی کے خلاف مقدمہ دائر کرنے سے گریزاں ہیں۔ باوجود اس کے کہ کمپنی نے اپنی غلطی تسلیم کی ہے اور گزشتہ ماہ پاکستانی خزانے میں 1.2 ارب روپے جمع کروائے ہیں، فیڈرل بیورو آف ریونیو (ایف بی آر) ہوانینگ فویون شپنگ کمپنی کے خلاف کریمنل کیس رجسٹرڈ کرنے سے ہچکچارہی ہے۔

اخبار کا کہنا ہے کہ ایف بی آر کے ایک عہدیدار نے نام خفیہ رکھنے کی شرط پر بتایا کہ ہوانینگ فویون شپنگ کمپنی کے خلاف قومی مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے ایف آئی آر نہیں کٹوائی گئی۔ ایف بی آر کی دستاویزات سے پتہ چلتا ہے کہ اس کمپنی کی ٹیکس چوری کا پتہ ماڈل کسٹمز کولیکٹوریٹ پورٹ قاسم کراچی نے لگایا تھا۔ یہ کمپنی چین کے سرکاری ہوانینگ گروپ کی ملکیت ہے۔ اسی گروپ کی ایک اور کمپنی ہوا نینگ شان ڈونگ روئی انرجی لمیٹڈ نے 1320 میگاواٹ کا ساہیوال پاورپلانٹ پاک چین اقتصادی راہداری فریم ورک کے تحت تعمیر کیا ہے۔ مبینہ ٹیکس چور کمپنی اسی پاور پلانٹ کو کوئلہ فراہم کرتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد