کالج میں امتحان سے قبل پرچہ دینے آئی لڑکیوں کے کپڑے انتظامیہ نے بلیڈ سے کاٹ دئیے کیونکہ۔۔۔

کالج میں امتحان سے قبل پرچہ دینے آئی لڑکیوں کے کپڑے انتظامیہ نے بلیڈ سے کاٹ ...

نئی دلی(نیوز ڈیسک)نقل پر کیسے قابو پائیں، یہ سوال تو کم و بیش ہر ملک میں پایا جاتا ہے لیکن اس مسئلے کا نرالا حل بھارت میں سامنے آیا ہے، جسے دیکھ کر آپ بھی بھارتیوں کی ذہانت کے قائل ہو جائیں گے۔ریاست بہار کے ایک کالج میں نرسنگ کا امتحان دینے کے لئے آئی طالبات پر سٹاف کو شک تھا کہ ان کی قیمضوں کے بازﺅں کے نیچے نقل کا مواد چھپا ہو سکتا، جس کا حل انہوں نے یہ نکالا کہ کمرہ امتحان میں جانے سے قبل سب طالبات کی قیمضوں کے بازو کاٹ ڈالے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

دی گارڈین کے مطابق ٹی وی پر نشر ہونے والی ایک ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ کمرہ امتحان میں داخل ہونے سے پہلے سٹاف اہلکار طالبات کی قمیضوں کے بازو کاٹ رہے ہیں۔ ضلع مظفر پور کے اس کالج کی سکیورٹی پر درجنوں پولیس اہلکار بھی تعینات تھے جن کی نگرانی میں یہ سب کام ہوا۔ ویڈیو میں بہت سی طالبات کو اپنی قمیضوں کے کٹے ہوئے بازو ساتھ اُٹھا کر کمرہ امتحان میں جاتے دیکھا جاسکتا ہے۔ جب اس واقعہ کی خبر میڈیا میں آئی تو ایک ہنگامہ برپاہوگیا اور مختلف شہروں میں طلبا نے احتجاج شروع کر دیا۔ ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر لالن پرساد سنگھ کا کہنا تھا کہ جس کالج میں یہ واقعہ پیش آیا اسے مزید امتحانات کا انعقاد کرنے سے روک دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں امتحانات کے دوران بہت بڑے پیمانے پر نقل کی جاتی ہے اور خصوصاً ریاست بہار اس حوالے سے بہت ہی بدنام ہے۔ فروری کے مہینے میں سکول کے امتحانات ہوئے تو تقریباً ایک ہزار طلبا کو نقل کرنے کے جرم میں امتحانات سے خارج کیا گیا۔ دو سال قبل مظفر پور شہر میں ہی ایک او ردلچسپ واقعہ اس وقت سامنے آیا جب آرمی کے ایک سنٹر پر لئے جانے والے امتحان کے دوران طلبا کا پورا لباس ہی اتروادیا گیا اور انہوں نے صرف انڈروئیر پہن کر امتحان دیا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بین الاقوامی

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...