اگر ریڈار چل رہے ہوتے تو مودی صاحب سوچیں کیا ہوتا: وزیر خارجہ 

اگر ریڈار چل رہے ہوتے تو مودی صاحب سوچیں کیا ہوتا: وزیر خارجہ 

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، آ ئی این پی،این این آئی)وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکہ کی جانب سے پاکستان پر ویزا پابندیوں کی تردید کردی۔قائمہ کمیٹی برائے خارجہ کے اجلاس میں شاہ محمود قریشی نے بتایا کہ امریکہ کی طرف سے کوئی ویزا پاپندیاں نہیں لگائی گئیں، امریکی سفارتحانے نے پریس ریلیز بھی جاری کی ہے، امریکا نے غیر قانونی طور پر مقیم پاکستانی پکڑے جن کو وہ واپس بھیجنا چاہتا ہے اور اس سلسلے میں 70 سے زیادہ پاکستانیوں کو ڈی پورٹ کیاجارہا ہے جو آج بروزبدھ پاکستانی خصوصی پرواز سے آرہے ہیں۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ جتنا ویزا امریکا دے گا، اتنا ہی پاکستان دے گا، اگر امریکا 5 سال کا ویزا دے گا تو پاکستان بھی 5 سال کا ویزا دے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ امریکا کی ساؤتھ ایشیاء کی سٹریٹجک پالیسی میں تبدیلی آئی ہے، امریکی حکومت سمجھتی ہے کہ افغان حکومت کو مذاکرت کی میز پر ہونا چاہیے، طالبان امریکا سے براہ راست مذاکرت کرنا چاہتے ہیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہے کہ  پاکستان انٹرا افغان ڈائیلاگ کو سپورٹ کرتا ہے اور سہولت کاری کا کردار ادا کر رہا ہے،18مئی کو کویت کادورہ کروں گا  اورپاکستان اور کویت کے درمیان ورکرز کے ویزوں کا مسئلہ اٹھایا جائے گا ، پاکستان اور جی سی سی ممالک کے درمیان آزاد تجارتی معاہدہ کھٹائی میں پڑ گیاہے، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے تعاون کے باوجود قطر کے ساتھ تعلقات بحال رکھے، امیدہے قطر کے امیر جلد پاکستان کا دورہ کریں گے، امریکہ اور ایران کے درمیان نیوکلئیر ڈیل کے معاملہ پر کشیدگی میں اضافہ ہو رہا ہے، پاکستان اس بدلتی ہوئی صورتحال کا جائزہ لے رہا ہے اور مشاورت اور غور و فکر کے بعد پالیسی واضع کریں گے، پاکستان ایران گیس پائپ لائن منصوبے پر عمل کیلئے پاکستان تیار ہے لیکن ایران پر عالمی پابندیوں رکاوٹ ہیں،چینی باشندوں کی جعلی شادیوں  کے معاملے پر مبالغہ آرائی سے کام لیاجارہا ہے ، چین کے سفارت خانہ کے ساتھ رابطہ میں ہیں،مسئلہ حل کیا جار ہاہے، اس نتیجہ پر پہنچے ہیں کہ کچھ عناصر اس مہم کے پیچھے ہیں جو پاکستان اور چین کے تعلقات خراب کرنا چاہتے ہیں اور غلط فہمی پھیلانا چاہتے ہیں، معاملے تک ہر پہلوسے تحقیق ہو رہی،معاملہ حل ہونے تک چین نے ویزوں کا اجراء بند کر دیا ہے، جب راڈار نہیں چل رہے تھے تو بھارت کے  دو طیارے مار گرائے، اگر ریڈار چل رہے ہوتے تو مودی صاحب سوچیں کہ کیا ہوتا،سعودی عرب سے نارکاٹیکس، منشیات، قتل و غارت  اور دیگر سنگین جرائم میں ملوث قیدیوں کیلئے رعایت نہیں مانگ رہے، امید ہے2107 قیدی جلد رہا ہوں گے،وزارت خارجہ کی کارکردگی کو مزید فعال اور بہتر بنانے کیلئے انقلابی اقدامات کئے جا رہے ہیں،امریکہ ستر سے زیادہ غیر قانونی پاکستانیوں کو امریکہ سے ڈی پورٹ کر نے جا رہے ہیں،بیرون ممالک میں پاکستانیوں کو قانونی معاونت فراہم کرنے کے لئے سفارت خانوں کے پاس فنڈز دستیاب نہیں ہیں۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے 27جون کو تمام سفارتکاروں کا اجلاس طلب کرلیا جس میں معاشی سفارت کاری کے فروغ پر بات ہوگی۔منگل کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کے اجلاس کے دور ان وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے بتایاک ہ27 جون کو تمام سفارت کاروں کا اجلاس بلایا ہے،جس میں معاشی سفارت کاری کے فروغ پر بات ہوگی۔وزیر خارجہ نے کہاکہ قطر نے پاکستان باسمتی چاول پر پابندی لگائی تھی ان سے یہ معاملہ اٹھایا ہوا ہے۔شاہ محمود قریشی نے کہاکہ  بھارت پاکستان کا باسمتی چاول اپنے نام سے عالمی مارکیٹ میں فروخت کررہا ہے، قطری اعلی حکام کے ساتھ پاکستانی باسمتی چاول کی مارکیٹ کے لئے معاملہ اٹھایا ہے۔انہوں نے کہاکہ کمرشل اتاشیوں کی کارکردگی دیکھ رہے ہیں،وزارت خارجہ میں بھی بنیادی تبدیلیاں کی ہیں۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ جو سفارت کار کام نہیں کر رہا اس کا ہم نے اچار ڈالنا ہے۔انہوں نے کہاکہ بیرون ملک سفیروں کی مدت ملازمت ان کی کارکردگی سے مشروط کردی ہے۔شاہ محمود نے کہاکہ پہلے سفیر کی مدت ملازمت تین سال کیلئے کی جاتی تھی۔

وزیرخارجہ 

مزید : صفحہ اول