سعودی عرب میں کفیل نے سزا دینے کے لئے اس غیر ملکی ملازمہ کو درخت کے ساتھ باندھ دیا، ایسا کیا قصور تھا؟ جان کر آپ کی بھی آنکھوں میں آنسو آجائیں

سعودی عرب میں کفیل نے سزا دینے کے لئے اس غیر ملکی ملازمہ کو درخت کے ساتھ باندھ ...
سعودی عرب میں کفیل نے سزا دینے کے لئے اس غیر ملکی ملازمہ کو درخت کے ساتھ باندھ دیا، ایسا کیا قصور تھا؟ جان کر آپ کی بھی آنکھوں میں آنسو آجائیں

  

جدہ(مانیٹرنگ ڈیسک) انٹرنیٹ پر ایک لڑکی کی تصاویر بہت وائرل ہو رہی ہیں جسے دھوپ میں ایک درخت کے ساتھ باندھا گیا ہوتا ہے۔ اب ان تصاویر کی ایسی حقیقت سامنے آ گئی ہے کہ سن کر ہر کسی کی آنکھیں ڈبڈبا جائیں۔ میل آن لائن کے مطابق یہ لڑکی 26سالہ فلپائنی شہری اکوسٹا برئیلو ہے جو سعودی عرب میں ایک امیرکفیل کے گھر میں ملازمت کرتی ہے اور اس سفاک شخص نے ایک انتہائی معمولی غلطی کی سزا دینے کے لیے اسے درخت کے ساتھ باندھ رکھا ہے۔

رپورٹ کے مطابق اکوسٹا گھر کی صفائی کر رہی تھی اور اس نے فرنیچر باہر نکالا تھا، جس میں سے ایک صوفہ اس نے دھوپ میں ہی پڑا رہنے دیا۔ اس کی اس غلطی پر کفیل اس قدر مشتعل ہوا کہ اسے درخت کے ساتھ باندھ دیا جہاں براہ راست دھوپ اس لڑکی پر پڑ رہی تھی۔ لڑکی کے ایک ساتھی ملازم نے اس کی تصاویر بنا کر انٹرنیٹ پر پوسٹ کیں اور بتایا کہ لڑکی کو کفیل نے تمام دن دھوپ میں باندھے رکھا تاکہ اسے صوفے کو دھوپ میں رکھنے کا احساس ہو سکے۔یہ انسانیت سوز واقعہ 9مئی کو پیش آیا تھا۔فلپائنی دفترخارجہ کی طرف سے جاری بیان میں بتایا گیا ہے کہ ”واقعے کی خبر ملنے پر اس لڑکی کو ریسکیو کر لیا گیا ہے اور اسے واپس فلپائن پہنچا دیا گیا ہے۔لڑکی 2بچوں کی ما بھی ہے جو فلپائن میں ہی مقیم ہیں اور لڑکی ان کا پیٹ پالنے کے لیے سعودی عرب میں محنت مزدوری کرتی تھی۔

مزید : عرب دنیا