گرین اسٹار کی جانب سے ملکی سطح پر کوروناکے خلاف ریلیف کی فراہمی

  گرین اسٹار کی جانب سے ملکی سطح پر کوروناکے خلاف ریلیف کی فراہمی

  

کراچی(پ ر) پاکستان کے انتہائی مستعد اداروں میں سے ایک اور خاندانی منصوبہ و کمیونٹی ہیلتھ پروگرام میں مہارت رکھنے والے ادارے، گرین اسٹار سوشل مارکیٹنگ (جی ایس ایم)پاکستان میں خاندانوں کی صحت، اور بالخصوص خواتین اور بچوں کی صحت، کی دیکھ بھال کے لیے فرنٹ لائن فورس کے طور پر کام کر رہی ہے۔ یہ-19 COVIDکی وباء سے درپیش خطرات پر قابو پانے کے لیے اضافی اقدامات بھی کر رہا ہے۔گرین اسٹار مارکیٹنگ سے تعلق رکھنے والے سند یافتہ اور پیشہ ور طبی عملہ اپنے وسیع نیٹ ورک کے ذریعے دوردراز علاقوں تک رسائی ممکن بنا رہا ہے۔ گرین اسٹار کا وسیع نیٹ ورک 90,000 ریٹیل آؤٹ لیٹس،35,000 دواخانوں، 9,000 ہیلتھ سروس پروائیڈرز پر مشتمل ہے جس میں دیگر چینلز مثلاً لیبارٹیریاں، ایف ایم سی جی اسٹورز، کلینکس وغیرہ شامل ہیں۔اپنی سماجی ذمہ داری کے اقدام کے جزو کے طور پر یہ ادارہ عوام کو کورونا وائرس سے بچانے اور اِس کے بارے میں آگاہی کو فروغ دینے میں حکومت کی مدد کر رہا ہے۔کورونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں غیر معمولی اضافے کے باوجود گرین اسٹار اپنے ہیلتھ کیئر سسٹم جاری رکھے ہوئے ہے۔ دیگر کارپوریٹ اداروں کے ہمراہ، گرین اسٹار بھی انسدادی تالابندی کے معاشی اثرات کم سے کم رکھنے میں بھی حصہ لے رہا ہے۔اِس کی اجتماعی کوششوں میں آبادی کے ایسے انتہائی غیرمحفوظ طبقے کو مفت خوراک، عطیات اور ہیلتھ کیئر کی فراہمی شامل ہیں جو آمدنی کے بغیر چند دن بھی گزارا نہیں کر سکتے۔اِس حوالے سے گرین اسٹار سوشل مارکیٹنگ کے چیف ایگزیکٹو ڈاکٹر ایس اے رب نے کہا:”صحت کے حوالے سے یہ ایک ایسا چیلنج کے جس کی پہلے کوئی مثال نہیں ملتی ہے اوراس نے سماجی و اقتصادی سرگرمیوں کو عالمی سطح پر تہہ و بالا کر کے رکھ دیا ہے۔لہٰذا، ہر شخص کی ذمہ داری ہے کہ وہ اپنے خاندان اور کمیونٹی کے لوگوں کی حفاظت کرے۔-19 COVID کے بحران کے دوران،گرین اسٹار مارکیٹنگ اِس خلاء کو بھرنے کرنے کے لیے پرْ عزم ہے کیوں کہ حاملہ خواتین اپنے بچے کی پیدائش میں تاخیر نہیں کر سکتیں۔ ایسی صورت حال میں، خاندانی منصوبہ بندی اور تولیدی صحت کو بہت اہمیت حاصل ہو گئی ہے۔ پاکستان کی 70 فیصد آبادی نجی کلینکس اور بنیادی صحت کی خدمات فراہم کرنے والوں پر بھروسہ کرتی ہے اور ہم اُنہیں، بنیادی سطح پر، ایک حکمت عملی کے تحت، تربیت دے رہے ہیں تاکہ وہ ٹیکنالوجی استعمال کر سکیں اور تحفظ کے لیے شخصی طور پر باہمی عمل کو سے کم کر سکیں۔

مزید :

کامرس -