آئی جی سندھ کی جانب سے پولیس اہلکاروں کی بہبود کیلئے ایک اور اقدام

    آئی جی سندھ کی جانب سے پولیس اہلکاروں کی بہبود کیلئے ایک اور اقدام

  

کراچی(کرائم رپورٹر)سندھ پولیس کورونا کے خلاف ہراول دستے کے طور پر اپنے فرائض انجام دے رہی ہے۔سندھ پولیس کے افسران اور جوان کورونا وبا سے تحفظ کے لیئے کیئے گئے حکومتی اقدامات کے نفاذ میں ہر لمحہ برسرپیکار ہے۔اس تمام صورتحال میں پولیس کے جوانوں کو بھی کورونا کے خطرات لاحق ہیں۔کیونکہ اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران وہ روزانہ سڑکوں, بازاروں اور آبادیوں کے اندر مختلف امور انجام دے رہے ہیں۔ابتک 170 کے قریب پولیس اہلکار اس وبا کا شکار ہوچکے ہیں جن میں سے 31 صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ باقی مختلف اسپتالوں میں ذیر علاج ہیں اور اس کاوش میں 5 اہلکار شہادت سے سرفراز ہوئے ہیں۔سندھ پولیس اپنے جوانوں کی حفاظت کے لیئے تمام تر ممکنہ اقدامات اٹھارہی ہے اور اس سلسلے میں سندھ گورنمنٹ کی جانب سے فراہم کردہ فنڈ میں سے تمام ضروری حفاظتی اشیاء کی فراہمی کی گئی ہے تاکہ اہلکاروں کی حفاظت کو یقینی بنایا جاسکے۔ہر یونٹ کو ہینڈ سینیٹائزر،ماسک،ڈیٹول، پی پی آئی(حفاظتی لباس) اور جراثیم کش صابن کی وافر مقدار مہیا کی گئی ہے۔مزید ضروری اشیاء کی فراہمی بھی کی جارہی ہے جن میں ٹیسٹنگ کٹس بھی شامل ہیں۔کورونا وبا کے شکار پولیس اہلکاروں کی بہبود کو مدنظر رکھتے ہوئے آئی جی سندھ نے صوبہ سندھ کے ہر ضلع اور ٹریفک پولیس کو ایک ایک لاکھ کی اضافی رقم بھی جاری کی ہے جوکہ کورونا کے مریض اہلکاروں اور انکے خاندانوں کی ہنگامی مدد کے لیئے استعمال کی جائیں گی۔مزیدبرآں ہر مریض کے لیئے فوری طور پر دس ہزار روپئے (10,000) کی خصوصی امدادی رقم علیحدہ سے جاری کی جارہی ہے جوکہ اس مریض کے خاندان کی سپورٹ کے لیئے ہوگی۔اس سلسلے میں یاد رہیکہ ہر ضلع کے اندر ایمرجیسی کورونا ڈیسک کا قیام بھی عمل میں لایا گیا ہے۔جو کہ سندھ پولیس کے اہلکاروں کی ٹیسٹنگ اور دادرسی کے متعلق تمام معلومات کا تبادلہ کرتا ہے اور انکی بہبود کے اقدامات کو یقینی بناتا ہے۔سی پی او کی ویلفیئر برانچ کے اندر ایک خصوصی ڈیسک بھی اس مقصد کے لیئے قائم کیا گیا ہے جو کہ تمام امور کی مربوط طریقے سے نگرانی کررہا ہے۔اپنے محدود وسائل کے باوجود سندھ پولیس اپنے تمام ذرائع کو بروئے کار لاکر اپنے جوانوں کی بہبود اور حفاظت کو یقینی بنانیکے عمل میں کوشاں ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -