وزیراعظم حالات کے پیش نظر ضد اور انا چھوڑ دیں‘ لیاقت بلوچ

  وزیراعظم حالات کے پیش نظر ضد اور انا چھوڑ دیں‘ لیاقت بلوچ

  

ملتان (سٹی رپورٹر)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان اور سیاسی انتخابی کمیٹی کے صدر لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ عمران خان حکومت اول دن سے ناتجربہ کاری، نااہلی اور تکبر و غرور کا شکار ہے۔ عوام خصوصاً،نوجوانوں کی امیدوں پر مایوسی کا سپرے کردیا گیاہے۔ 2018ء انتخابات دھاندلی زدہ تھے لیکن مسلم لیگ اور پی پی پی حکومتوں سے تنگ اسٹیک ہولڈرز نے (بقیہ نمبر27صفحہ7پر)

عمران خان کو برداشت کیا۔ پوری جدوجہد اور بندوبست سے حکومتیں بنادی گئیں،حکومت اور ریاست ایک پیج پر ہونے کا تاثر دیا گیا لیکن عملاً سیاسی، پارلیمانی، اقتصادی، بحران خطرناک شکل اختیار کر گئے اور وفاق و صوبوں کی محاذ آرائی، ایک پالیسی نہ ہونے کی وجہ سے قومی وحدت اور قومی سلامتی کے لیے خطرات پیدا ہوگئے۔ احتساب کا پورا عمل فراڈ اور کرپٹ مافیا کے تحفظ کا آلہ کار بنادیا گیاہے۔ چوہدری برادران کے خلاف اگر کیس نیب نے کھولا تو عمران خان انکوائری کس چیز کی کریں گے۔ حکومت کے اندر حکومت اس اقتدار کو غرق کردے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے راولپنڈی، گجرات اور لاہور میں ضلعی سیاسی کمیٹیوں کے شرکائسے خطا ب کرتے ہوئے کیا۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ کرونا وبا تیزی سے پھیل رہی ہے۔ سمارٹ لاک ڈاو?ن نے پورے ملک میں کنفیوژن پھیلا دیاہے۔ مساجد میں ضابطہ کی پابندی ہر حکومت کا سارا زور رہا لیکن اب عوام وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے فیصلوں کی وجہ سے پریشان ہیں۔ ابھی بھی وقت ہے وزیراعظم عمران خان حالات کا ادراک کریں۔ ضد، انا اور ہٹ دھرمی چھوڑیں۔ کورونا وبا، مسئلہ کشمیر، افغانستان صورتحال اور بھارت کے جنگی عزائم کے مقابلہ میں قومی اتحاد کے لیے حکومت،ریاست اور قومی دینی سیاسی قیادت کو قومی متفقہ پالیسی پر متحد کریں۔ جماعت اسلامی کرونا وائرس، لاک ڈاو?ن میں متاثرین کی مدد جاری رکھے گی اور سیاسی بحرانوں کے مقابلہ کے لیے بھی ملک گیر تحریک کے ذریعے عوام کو متحد کیا جائے گا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -