صوبہ بھر میں ہر قسم کے جلسوں پر پابندی ایس او پیز کے مطابق مجالس کی اجازت

صوبہ بھر میں ہر قسم کے جلسوں پر پابندی ایس او پیز کے مطابق مجالس کی اجازت

  

ڈیرہ غازی خان‘اوچشریف(ڈسٹرکٹ بیورورپورٹ‘نمائندہ پاکستان) پنجاب حکومت نے رمضان کے آخری عشرہ ا صوبہ میں ہر قسم کے جلوس پر پابندی عائد کر دی جبکہ ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد کرتے ہوئے امام(بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

بارگاہوں اور گھروں میں مجالس کی مشروط اجازت دے دی گئی۔ محکمہ داخلہ پنجاب کے جاری مراسلہ کے مطابق مجالس عزا میں بچے اور بوڑھے، بیمار افراد کو مجالس عزا میں آنے سے منع کردیا گیا۔ مجلس امام بارگاہ کی چار دیواری کے اندر منعقد کی جاسکے گی۔مجلس سے پہلے امام بارگاہ کے فرش کو کلورین سے دھویا جانا لازمی اور شرکاء کے درمیان قطاروں کا فاصلہ کم از کم 6فٹ کا ہونا بھی لازمی اور ہر کسی کیلئے ماسک، دستانے پہننا لازمی ہوگا، ہاتھ ملانے اور بغل گیر ہونے سے پر ہیز کرنے کا کہا گیا ہے۔۔لاؤڈ سپیکر کی اجازت صرف اور صرف پنجاب ساؤنڈ سسٹم ایکٹ 2015کے تحت ہوگی جبکہ بہاول پور کی ضلعی پولیس نے یوم شہادت حضرت علی رضی اللہ تعالیٰ عنہ کے حوالے سے ایس او پیز پر مشتمل مراسلہ جاری کر دیا ہے، جبکہ امام بارگاہوں، رہائش گاہوں میں ایس او پیز کے مطابق مجالس کی اجازت ہو گی۔مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ایس او پیز کے مطابق مجالس میں شرکاء کی تعداد محدود اور ان کے درمیان 6 فٹ کا فاصلہ رکھا جائے گا، مجالس کے انعقاد کا وقت مقررہ ایک گھنٹہ ہو گا۔ مجالس میں ہاتھ ملانے سے گریز اور شریک ہر فرد کو ماسک لازمی پہننا ہو گا۔ اس موقع پر اجتماعی سحری اور افطاری کی اجازت بھی نہیں ہو گی، مجالس کے انعقاد سے پہلے رہائش گاہ اور امام بارگاہ کے فرش پر کلورین ملے جراثیم کش محلول کا چھڑکاؤ کیا جائے گا جبکہ شرکاء گھروں سے وضو کر کے مجالس میں شریک ہوں گے۔ ڈی پی او بہاول پور محمد صہیب اشرف نے ضلع بھر کے پولیس افسران کو حکومتی احکامات پر عملدرآمد کرانے کی ہدایت کی ہے۔اجازت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -