پیف سکولز مالکان کا 19مئی کو پھر لاہورمیں دھرنے کا اعلان

  پیف سکولز مالکان کا 19مئی کو پھر لاہورمیں دھرنے کا اعلان

  

شجاع آباد (نمائندہ خصوصی) پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن میں شامل سکولوں کو چار ماہ کی ادائیگیاں نہ ہو سکیں لاہور دھرنا میں سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہی کی جانب سے راجہ بشارت وزیر قانون کی صدارت میں بنائی گئی پارلیمانی کمیٹی میں صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے شامل ہونے سے انکارکردیا پارلیمانی کمیٹی نے فیڈریشن آف رجسٹرد سکولز سے ملاقات میں معذوری کا اظہار کر دیا ہے فیڈریشن آف رجسٹرد سکولز کے رہنماؤں ملک محمد اکرم وینس(بقیہ نمبر7صفحہ6پر)

، حافظ کامران، راؤ محمد افضل، چوہدری جاوید میو، مہرآصف سیال، راؤ روشن، قاری خالد محمود، اکبر صدیقی، بشیر احمد، محمد کامران، محمد عارف، خادم حسین، جاوید اقبال سمیت تمام سکولز مالکان نے کہا ہے وزیر تعلیم 18-5-20کو چار ماہ کی تنخواہوں کی ادائگیاں کر دیں ورنہ 19-5-20کو اسمبلی ہال لاہور کے باہر دما دم مست قلندر ہو گا دھرنا ہو گا مرنا ہو گا اپنے حقوق کیلئے ہر فورم استعمال کریں گے پنجاب بھر میں چار لاکھ اساتذہ کرام لاک ڈاؤن کی وجہ سے متاثر ہو گئے ہیں پیف کی جانب سے سکولوں کو ادائگیاں نہ ہونے سے ادارہ کے مالکان اور اساتذہ کرام کے گھروں میں بھوک ناچ رہی ہے عید سر پر ہے پنجاب بھر میں بارہ ہزار سکولز ہیں جن میں 31لاکھ طلباوطالبات زیر تعلیم ہیں ان بچوں کے مستقبل پرسوالیہ نشان ہے وزیرتعلیم مراد راس کا تاحال پیف سکولوں کے بارے میں ابھی تک غصہ ٹھنڈا نہیں ہوا ہے صوبائی وزیر تعلیم مراد راس اپنی ہٹ دھرمی پر قائم ہیں لاھوردھرنا میں بنائی جانے والی پارلیمانی کمیٹی میں فیڈریشن آف رجسٹرڈ سکولز کے نمائندگان کو روزہ کے ساتھ سارا دن مذاکرات کیلئے ذلیل وخوار کیا جاتا رہا پارلیمانی کمیٹی میں نہ تو صوبائی وزیر تعلیم آیا اور نہ دیگر افسران جس کی وجہ سے پارلیمانی کمیٹی کے صدر راجہ بشارت صوبائی وزیر قانون نے ہاتھ کھڑ ے کر دئیے ہیں فیڈریشن آف رجسٹرڈ سکولز کی باہمی مشاروت کے بعد لائحہ عمل طے ہوا ہے کہ 19-5-20کو اسمبلی ہال لاہور میں پنجاب بھر کے سکول مالکان اور اساتذہ کرام احتجاجی دھرنا دیں گے اور پے منٹ جاری نہ ہونے تک دھرنا جاری رہے گا۔

اعلان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -