ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی اساتذہ کے لئے ناقابل قبول ہے، سجاد اکبر

ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی اساتذہ کے لئے ناقابل قبول ہے، سجاد اکبر

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی اساتذہ کے لئے ناقابل قبول ہے، لاہور سمیت صوبہ بھر میں تحریک چلائیں گے۔اتھارٹی کے نفاذ کو روکنے کے لئے مختلف اساتذہ تنظیموں سے رابطے تیز کر دئیے گئے۔ حکمرانوں کی محکمہ تعلیم میں شعبدہ بازی کو برداشت نہیں کریں گے، محکمہ تعلیم کی ناقص پالیسیوں اور نت نئے تجربات کی وجہ سے سکاری سکول صرف غریب طبقے تک محدود رہ گیا ہے۔پنجاب ٹیچر یونین کے صدر سید سجاد اکبر کاظمی نے پاکستان سے خصوصی بات چیت کر تے ہوئے کہا کہ پبلک سکولوں میں بہترین نتائج برآمد کرنے کے مطالبے کئے جاتے ہیں جبکہ اساتذہ برادری اور قوم کے معماروں سے امتیازی سلوک بھی کیا جاتا ہے۔ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی کے زریعے تعلیم کے مقدس شعبے کو سیاست کے نذر کیا جا رہا ہے جو کہ پوری قوم سے زیادتی ہے۔نام نہاد اتھارٹی کے تحت کہ یہ اساتذہ کی عظمت اور وقار کو معاشرے میں پامال کرنے کا منصوبہ ہے جسے کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ تعلیمی اداروں میں سیاسی مداخلت کے ذریعے تعلیم و تعلم کا عمل انتہائی ناگفتہ حالت میں چلا جا ئے گا کیونکہ اتھاڑٹی کے ممران صوبائی حکومت منتخب کرے گی جبکہ اسکا چیرمین حکومت کا منتخب نمائندہ ہو گا۔اساتذہ کو غیر تدریسی کاموں میں مصروف کر دیا جاتا ہے اور تعلیمی سال کے اختتام پر مطلوبہ نتائج نہ آنے پر اساتذہ کی تنز لی کر دی جاتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ مردم شماری،انتخابات ،پولیو مہم،یو پی سروے سمیت ڈینگی مہم پر ڈیوٹیا ں لگا دی جاتی ہیں جس کے طا لبعلموں کے تدریسی مراحل پر منفی نتائج مرتب ہوتے ہیں اور بعد میں اساتذہ کی تضحیک کی جاتی ہے۔ناقص پالیسیوں کے باعث پبلک سکولوں کی تعداد اور کارکردگی میں کمی آ رہی ہے،ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی سمیت اساتذہ سے دیگر ہونے والے امتیازی سلوک کے خلاف بھرپور تحریک چلائی جائے گی اور حکومت کو یہ فیصلہ واپس لینے اور محکمہ میں بہتری لانے کے اقدامات تک تحریک جاری رہے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4