امریکہ سے تعلقات اور معاشی بحران پر حکومت گریٹ ڈبیٹ کرائے،حامد رضا

امریکہ سے تعلقات اور معاشی بحران پر حکومت گریٹ ڈبیٹ کرائے،حامد رضا

                لاہور( سٹاف رپورٹر )سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چےئرمین صاحبزادہ حامد رضا نے تمام سےاسی و مذہبی راہنماﺅں کو خصوصی خط ارسال کےا ہے جس میں قومی قےادت سے اپےل کی گئی ہے کہ وہ حالات کی سنگےنی کا احساس کریں اور قےام امن،امرےکہ اور طالبان سے نجات اور معاشی بحران کے خاتمے کے اےجنڈے پر متحد ہوجائےں کےونکہ ملک و قوم کو اس وقت نفاق نہےں اتفاق کی ضرورت ہے۔ ملک دشمن عالمی سازشوں کے توڑکے لےے قومی اتحاد ضروری ہے۔ ملک نازک موڑ پر کھڑا ہے اس لےے احتےاط اور اعتدال کا اراستہ اختےار کرنا ہوگا۔ قومی قےادت خطے سے امرےکہ کو نکالنے کے لےے ےکسو ہوجائے اورتمام قومی راہنما امرےکہ نواز خارجہ پارلےسی ختم کرنے اور نفاذِ نظام مصطفےٰ کے لےے حکومت پر دباﺅ ڈالےں۔ افہام و تفہےم کی فضا پےدا کرکے ہی ملک کو بحرانوں سے نکالا جاسکتا ہے۔ قومی راہنما قوم کو تقسےم اور کنفےوز کرنے والے غےر ذمہ دارانہ بےانات سے گرےز کریں کےونکہ قومی انتشار کا فائدہ دشمنان پاکستان اٹھا رہے ہیں۔ قومی راہنما پاک فوج اور دہشت گردی کے خلاف جنگ کو متنازعہ بنانے کی کوششوں کو ناکام بنائےں۔ امرےکہ ہمیں آپس میں لڑاکر کمزور کررہا ہے۔ قومی راہنما متحد ہوکر امرےکہ کو ڈرون حملے اور طالبان کو خود کش حملے بند کرنے پر مجبورکریں خط میں کہا گےا ہے کہ امرےکی نےو ورلڈ آرڈر اسلام دشمنی پر مبنی ہے، اس لےے تمام سےاسی و مذہبی راہنما امرےکی نےو ورلڈ آرڈ کی مزاحمت کے لےے مفاہمت کی روش اپنائےں۔ خط میں تجوےز دی گئی ہے کہ دہشت گردی ،امرےکہ سے تعلقات اور معاشی بحران کے موضوع پر حکومت پانچ روزہ گرےٹ ڈےبےٹ کروائے، جس میں تمام ملکی مسائل پر مشترکہ نےشنل اےجنڈا ”مےثاق پاکستان“ کے نام سے تےار کےا جائے اور تمام سےاسی و مذہبی راہنما اس مےثاق پاکستان پر دستخط کرکے اس پر عمل کاحلف اٹھائےں۔ خط میں کہا ہے کہ ملک کو گھمبےر حالات سے نکالنا قومی قےادت کے تدبر اور دانش کا امتحان ہے۔ قوم شدید ماےوسی اور مسائل کا شکار ہے۔ ملک مہنگائی اور دہشت گردی کی آگ میں جل رہا ہے اور ملکی سلامتی کو شدےد خطرات درپےش ہیں۔ ان حالات میں سےاسی دشمنےاں بھول کر ملک بچانے کے لےے ہاتھوں میں ہاتھ ڈالنے کی ضرورت ہے اگر آج قومی قےادت نے متحد ہوکر قومی و عوامی مسائل کے حل کے لےے کچھ نہ کےا تو ملک کسی بڑے سانحے سے دو چار ہوسکتا ہے۔ ملک کو خانہ جنگی سے بچانے کے لےے قومی قےادت اپنی ذمہ داریوں کا احساس کرے اور جوش کی بجائے ہوش سے ملکی مفاد میں فےصلے کئے جائےں۔

خط

مزید : صفحہ آخر