عاشورہ محرم: ماتمی جلوس مکمل، راولپنڈی میں تصادم، 12 افراد جاں بحق،کرفیو لگادیا گیا ، موبائل فون سروس اتوار تک بند

عاشورہ محرم: ماتمی جلوس مکمل، راولپنڈی میں تصادم، 12 افراد جاں بحق،کرفیو ...
عاشورہ محرم: ماتمی جلوس مکمل، راولپنڈی میں تصادم، 12 افراد جاں بحق،کرفیو لگادیا گیا ، موبائل فون سروس اتوار تک بند

  


لاہور + راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک) سخت حفاظتی انتظامات میں عاشورہ محرم کے ماتمی جلوس طے شدہ شیڈول کے مطابق اپنے اپنے مقام پر مکمل ہو گئے جس دوران مجموعی طور پر صورتحال پر امن رہی تاہم راولپنڈی میں دو گرپوں میں تصادم کے نتیجے میں 120افراد جاں بحق اور 42 زخمی ہو گئے  جہاں کرفیو نافذ کردیا گیا ہے جبکہ فوج اور قانون نافذ کرنے والے دوسرے اداروں نے علاقے کا کنٹرول سنبھال لیا جہاں موبائل سروس بھی اتوار تک بند کھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس سے پہلے وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کر تے ہوئےذمہ داروں کے خلاف کارروائی کا حکم  دیاتھا۔ ماتمی جلوس کے دوران راولپنڈی کے راجہ بازارسے گزرنے والے یوم عاشور کے جلوس پر فائرنگ کے بعد 2 گروپوں میں مسلح تصادم شروع ہو گیا جس کے نتیجے میں 10 افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوگئے۔ زخمیوں کو ڈی ایچ کیو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے اور ہسپتال میں ایمرجنسی نافذ کرکے اضافی ڈاکٹروں کو بھی طلب کرلیا گیا ہے۔ تصادم کے دوران شرپسندوں نے فیصل کلاتھ مارکیٹ کو آگ لگادی اور دیکھتے ہی دیکھتے آگ نے ارد گرد کی دکانوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا جبکہ شرپسندوں نے بازار میں توڑ پھوڑ بھی کی۔ کشیدہ صورتحال کے پیش نظر پولیس کی بھاری نفری جائے وقوعہ پر پہنچی لیکن حالات کنٹرول کرنے میں ناکام رہی جبکہ شرپسندوں کی جانب سے فائر بریگیڈ کی گاڑیوں کو آگ بجھانے سے بھی روک دیا گیا۔ حالات قابو سے باہر ہونے کے بعد امن وامان کی صورتحال کی ذمہ داری فوج کے حوالے کردی گئی جس کے بعد فوج کی 6 کمپنیوں کو پارا چوک، راجہ بازار، باڑا مارکیٹ، بنی چوک اور قدیمی روڈ پر تعینات کردیا گیا ہے جہاں فوجی دستوں نے گشت شروع کردیا ہے اور لوگوں کی پیچھے ہٹنے کی ہدایت کر دی ہے۔ راجہ بازار میں کشیدگی کے باعث قریبی تجارتی مراکز کو بند کرادیا گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق واقعہ میں ملوث کچھ شرپسندوں کو تحویل میں لے کرنامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔ علاقے میں کشیدگی کے باعث سول ہسپتال جانے والے راستے بند ہوگئے جس کے باعث مریضوں کو سخت پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ تصادم کے دوران کوریج کیلئے پہنچنے والے میڈیا کے نمائندوں پر بھی مشتعل افراد نے حملہ کردیا جس میں نجی ٹی وی چینل کے 2 کیمرہ مین بھی زخمی ہوگئے۔وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر اور آر پی او راولپنڈی سے رپورٹ طلب کرلی ہے اور ذمہ داروں کے خلاف سخت کارروائی کا حکم دیا ہے۔ راولپنڈی کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی صدارت میں ہنگامی اجلاس ہوا جس میں وزیر قانون رانا ثناءاللہ، شجاع خانزادہ، چیف سیکرٹری، ہوم سیکرٹری اور آئی جی پنجاب سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے سربراہان نے شرکت کی۔ اجلاس میں واقعہ کی سخت مذمت کی گئی جبکہ شہبازشریف نے کابینہ کمیٹی کے ارکان کو فوری طور پر راولپنڈی پہنچنے کی ہدایت کی۔کشیدگی کم نہ ہونے پر کمشنر راولپنڈی کی درخواست پر پنجاب حکومت نے راولپنڈی میں چوبیس گھنٹوں کیلئے کرفیو نافذ کردیا اور موبائل فون کی سروس کی معطلی  بھی اتوار تک بڑھا دی ہے۔پنجاب حکومت کے ترجمان کے مطابق کینٹ کے علاقوں میں کرفیو نافذ نہیں کیا گیا بلکہ اس کا نفاذ صرف راولپنڈی کے 19تھانوں کی حدود میں ہوگا۔تازہ ترین اطلاعات کے مطابق فوج شہر میں گشت کر رہی ہے ، عبادت گاہوں کی سیکیورٹی بھی بڑھا دی گئی ہے اور ہسپتالوں میں ایمرجنسی لگا دی گئی ہے۔بی بی سی کے مطابق راولپنڈی کے علاقے کالج روڈ سے ایک عینی شاہد نے بی بی سی کو ٹیلی فون پر بتایا کہ کسی کو گھر سے باہر جانے کی اجازت نہیں اور انھوں نے گلی میں فوج کے جوانوں کو دیکھا ہے۔جماعت اہلسنت و الجماعت کے ایک رکن اونیب فاروقی نے دعوے کیا کہ ہلاک ہونے والے افراد میں سے اکثر کا تعلق ان کی تنظیم سے ہے۔

˜“¢Ž¦ Ÿ‰ŽŸé Ÿ„Ÿ¤ ‡ž¢’ ŸœŸží Ž¢žƒ Œ¤ Ÿ¤¡ „”‹Ÿí 10 šŽ‹ ‡¡ ‚‰›ž¦¢Ž + Ž¢žƒ Œ¤ ⟁ ¤…Ž  Œ¤’œá ’Š„ ‰š—„¤  „—Ÿ„ Ÿ¤¡ ˜“¢Ž¦ Ÿ‰ŽŸ œ¥ Ÿ„Ÿ¤ ‡ž¢’ –¥ “‹¦ “¤Œ¢ž œ¥ Ÿ–‚› ƒ ¥ ƒ ¥ Ÿ›Ÿ ƒŽ ŸœŸž ¦¢ £¥ ‡’ ‹¢Ž  Ÿ‡Ÿ¢˜¤ –¢Ž ƒŽ ”¢Ž„‰ž ƒŽ Ÿ  Ž¦¤ „¦Ÿ Ž¢žƒ Œ¤ Ÿ¤¡ ‹¢ Žƒ¢¡ Ÿ¤¡ „”‹Ÿ œ¥  „¤‡¥ Ÿ¤¡ 10šŽ‹ ‡¡ ‚‰› ¢Ž œ£¤ ŠŸ¤ ¦¢ £¥ ‡‚œ¦ š¢‡ ¢Ž › ¢   š œŽ ¥ ¢ž¥ ‹¢’Ž¥ ‹Ž¢¡  ¥ ˜ž›¥ œ œ …Ž¢ž ’ ‚§ž ž¤ ‡¦¡ Ÿ¢‚£ž ’Ž¢’ ‚§¤ ‚‰ž  ¦¤¡ œ¤ ‡ Ž¦¤ó ¢¤Ž˜ž¤½ ƒ ‡‚  ¥ ¢›˜¦ œ  ¢…’ ž¤„¥ ¦¢£¥ Žƒ¢Ž… –ž‚ œŽ ž¤ ¢Ž Ÿ¦ ‹Ž¢¡ œ¥ Šžš œŽŽ¢£¤ œ ‰œŸ ‹¥ ‹¤ ¦¥ó Ÿ„Ÿ¤ ‡ž¢’ œ¥ ‹¢Ž  Ž¢žƒ Œ¤ œ¥ Ž‡¦ ‚Ž’¥ Ž ¥ ¢ž¥ ¤¢Ÿ ˜“¢Ž œ¥ ‡ž¢’ ƒŽ š£Ž  œ¥ ‚˜‹ 2 Ž¢ƒ¢¡ Ÿ¤¡ Ÿ’ž‰ „”‹Ÿ “Ž¢˜ ¦¢ ¤ ‡’ œ¥  „¤‡¥ Ÿ¤¡ 10 šŽ‹ ¦žœ ¢Ž Ÿ„˜‹‹ ŠŸ¤ ¦¢£¥ó ŠŸ¤¢¡ œ¢ Œ¤ ¤ˆ œ¤¢ ¦’ƒ„ž Ÿ „›ž œŽ‹¤ ¤ ¦¥ ¢Ž ¦’ƒ„ž Ÿ¤¡ ¤ŸŽ‡ ’¤  š œŽœ¥ •š¤ Œœ…Ž¢¡ œ¢ ‚§¤ –ž‚ œŽž¤ ¤ ¦¥ó „”‹Ÿ œ¥ ‹¢Ž  “Žƒ’ ‹¢¡  ¥ š¤”ž œž„§ ŸŽœ¤… œ¢ ³ ž‹¤ ¢Ž ‹¤œ§„¥ ¦¤ ‹¤œ§„¥ ³  ¥ Ž‹ Ž‹ œ¤ ‹œ ¢¡ œ¢ ‚§¤ ƒ ¤ žƒ¤… Ÿ¤¡ ž¥ ž¤ ‡‚œ¦ “Žƒ’ ‹¢¡  ¥ ‚Ž Ÿ¤¡ „¢ ƒ§¢ ‚§¤ œ¤ó œ“¤‹¦ ”¢Ž„‰ž œ¥ ƒ¤“  —Ž ƒ¢ž¤’ œ¤ ‚§Ž¤  šŽ¤ ‡£¥ ¢›¢˜¦ ƒŽ ƒ¦ ˆ¤ ž¤œ  ‰ž„ œ …Ž¢ž œŽ ¥ Ÿ¤¡  œŸ Ž¦¤ ‡‚œ¦ “Žƒ’ ‹¢¡ œ¤ ‡ ‚ ’¥ š£Ž ‚Ž¤¤Œ œ¤ ¤¢¡ œ¢ ³ ‚‡§ ¥ ’¥ ‚§¤ Ž¢œ ‹¤ ¤ó ‰ž„ ›‚¢ ’¥ ‚¦Ž ¦¢ ¥ œ¥ ‚˜‹ Ÿ  ¢Ÿ  œ¤ ”¢Ž„‰ž œ¤ Ÿ¦ ‹Ž¤ š¢‡ œ¥ ‰¢ž¥ œŽ‹¤ £¤ ‡’ œ¥ ‚˜‹ š¢‡ œ¤ 6 œŸƒ ¤¢¡ œ¢ ƒŽ ˆ¢œí Ž‡¦ ‚Ží ‚ ŸŽœ¤…í ‚ ¤ ˆ¢œ ¢Ž ›‹¤Ÿ¤ Ž¢Œ ƒŽ „˜¤ „ œŽ‹¤ ¤ ¦¥ ‡¦¡ š¢‡¤ ‹’„¢¡  ¥ “„ “Ž¢˜ œŽ‹¤ ¦¥ ¢Ž ž¢¢¡ œ¤ ƒ¤ˆ§¥ ¦… ¥ œ¤ ¦‹¤„ œŽ ‹¤ ¦¥ó Ž‡¦ ‚Ž Ÿ¤¡ œ“¤‹¤ œ¥ ‚˜† ›Ž¤‚¤ „‡Ž„¤ ŸŽœ œ¢ ‚ ‹ œŽ‹¤ ¤ó ƒ¢ž¤’ Ž£˜ œ¥ Ÿ–‚› ¢›˜¦ Ÿ¤¡ Ÿž¢† œˆ§ “Žƒ’ ‹¢¡ œ¢ „‰¢¤ž Ÿ¤¡ ž¥ œŽ Ÿ˜ž¢Ÿ Ÿ›Ÿ ƒŽ Ÿ „›ž œŽ‹¤ ¤ ¦¥ó ˜ž›¥ Ÿ¤¡ œ“¤‹¤ œ¥ ‚˜† ’¢ž ¦’ƒ„ž ‡ ¥ ¢ž¥ Ž’„¥ ‚ ‹ ¦¢£¥ ‡’ œ¥ ‚˜† ŸŽ¤•¢¡ œ¢ ’Š„ ƒŽ¤“ ¤ œ ’Ÿ  œŽ  ƒó „”‹Ÿ œ¥ ‹¢Ž  œ¢Ž¤‡ œ¤ž£¥ ƒ¦ ˆ ¥ ¢ž¥ Ÿ¤Œ¤ œ¥  Ÿ£ ‹¢¡ ƒŽ ‚§¤ Ÿ“„˜ž šŽ‹  ¥ ‰Ÿž¦ œŽ‹¤ ‡’ Ÿ¤¡  ‡¤ …¤ ¢¤ ˆ¤ ž œ¥ 2 œ¤ŸŽ¦ Ÿ¤  ‚§¤ ŠŸ¤ ¦¢£¥ó¢¤Ž˜ž¤½ ƒ ‡‚ “¦‚ “Ž¤š  ¥ ¢›˜¦ œ  ¢…’ ž¤„¥ ¦¢£¥ œŸ“ Ž ¢Ž ³Ž ƒ¤ ¢ Ž¢žƒ Œ¤ ’¥ Žƒ¢Ž… –ž‚ œŽž¤ ¦¥ ¢Ž Ÿ¦ ‹Ž¢¡ œ¥ Šžš ’Š„ œŽŽ¢£¤ œ ‰œŸ ‹¤ ¦¥ó Ž¢žƒ Œ¤ œ¤ ”¢Ž„‰ž œ ‡£¦ ž¤ ¥ œ¥ ž¤¥ ¢¤Ž˜ž¤½ ƒ ‡‚ “¦‚ “Ž¤š œ¤ ”‹Ž„ Ÿ¤¡ ¦ Ÿ¤ ‡ž’ ¦¢ ‡’ Ÿ¤¡ ¢¤Ž › ¢  Ž  † £ žž¦í “‡˜ Š ‹¦í ˆ¤š ’¤œŽ…Ž¤í ¦¢Ÿ ’¤œŽ…Ž¤ ¢Ž ³£¤ ‡¤ ƒ ‡‚ ’Ÿ¤„ ‹¤Ž › ¢   š œŽ ¥ ¢ž¥ ‹Ž¢¡ œ¥ ’Ž‚Ž¦   ¥ “Žœ„ œ¤ó ‡ž’ Ÿ¤¡ ¢›˜¦ œ¤ ’Š„ ŸŸ„ œ¤ £¤ ‡‚œ¦ “¦‚“Ž¤š  ¥ œ‚¤ ¦ œŸ¤…¤ œ¥ Žœ  œ¢ š¢Ž¤ –¢Ž ƒŽ Ž¢žƒ Œ¤ ƒ¦ ˆ ¥ œ¤ ¦‹¤„ œ¤ó

مزید : راولپنڈی /اہم خبریں