اکادمی ادبیات کے زیر اہتمام یوم اقبال پر تقریب کا انعقاد 

      اکادمی ادبیات کے زیر اہتمام یوم اقبال پر تقریب کا انعقاد 

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)اکادمی ادبیا ت پاکستان کراچی کے زیراہتمام شاعر مشرق ڈاکٹر علامہ اقبال  ؒ کے حوالے سے مذاکرہ عالم انسانیت کے شاعر اور مشاعرہ منعقد کیا گیا۔ جس کی صدارت ملک کے معروف دانشور شاعر پروفیسر سحر انصاری نے کی۔ اس  موقع پر پروفیسر سحر انصاری نے کہا کہ علامہ اقبال ایک ایسے فلسفی ہیں۔ جن کہ فکر اور کالم کی اپیل براہ راست انسان سے ہے۔ وہ  عالم انسانیت کے شاعر ہیں۔ اور عالم انسانیت کے فلفسی بھی۔ قرآن و حدیث کی تعلیم ان کے افکار کا بنیادی ماخذ ہیں لہذا انہوں نے قرآنی اور اسلامی تعلیمات کی روشنی میں ان افکار کی ترویج کی ہے۔ جو اسلام کا منتہائے مقصود ہیں، فکر اقبال نے اسلامی تعلیمات کی روشنی میں انسان کو بنیادی اہمیت دی ہے۔ اقبال کی زندگی میں ہی انہیں ایک سنجیدہ  علمی مطالعے اور توضیح کا موضوع بنا لیا گیا تھا۔ اس میں معافق و مخالف دونوں قسم کی تحریریں شامل ہیں۔ ان تحریریوں کے لکھنے والوں میں اکثریت نے یا تو محض محبت اور عقیدت میں تعریف و توصیف سے کام لیا ہے، یا نادانی و کم علمی اور تعصب کی بنا پر بے بنیاد  نکتہ چینی کی ہے۔ یہ دونوں قسم کی تحریریں اب تاریخ کا حصہ ہیں۔  قادربخش سومرو ریزیڈنٹ ڈائریکٹر نے کہا  اقبال ہماری اجتماعی وجود کے لیئے نظریاتی اعتبار سے بے حد اہمیت رکھتا ہے۔ اقبال نے برصغیر میں ہمارے الگ اور ممتاز تشخص کو مرتب و منظم کرنے کے لیئے ہماری رہنمائی کی۔ 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر