پشاور زرعی یونیورسٹی میں چھاتی کے کینسر کی علامات اور ابتدائی علاج کے عنوان سے سیمینار

پشاور زرعی یونیورسٹی میں چھاتی کے کینسر کی علامات اور ابتدائی علاج کے عنوان ...

  



پشا ور (سٹی رپورٹر)گزشتہ روز سٹوڈنٹس کونسلنگ پلیسمینٹ زرعی یونیورسٹی پشاور نے شوکت خانم میموریل ہسپتال پشاور اور پاکستان سائنٹفک، ٹیکنالوجی اینڈ انفارمیشن سنٹر پشاور کے تعاون سے ویڈیو کانفرنس ہال زرعی یونیورسٹی پشاور میں خواتین فیکلٹی ممبران، سکالرز اور طالبات کے لئے ایک روزہ آگاہی سیمنار '' چھاتی کینسر کے علامات اور ابتدائی علاج'' کے عنوان سے انعقاد کیا. سیمینار کا مقصد خواتین میں بڑھتی ہوئی مہلک مرض چھاتی کینسر کے بارے میں آگاہی اور تدابیر اختیار کرنا تھا. وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پشاور پروفیسر ڈاکٹر جہان بخت (فل برائٹر) سیمینار میں مہمان خصوصی تھے. ڈاکٹر صفورہ شاہد (کنسلٹنٹ انکولوجسٹ) اشوکت خانم میموریل ہسپتال پشاور کے ایمبیسڈر سیمنار کی ریسورس پرسن تھی. انہوں نے چھاتی کینسر پر ایک جامع لیکچر دیا.  انہوں نے بریسٹ کینسر پر شرکا کو منطقی طور پر باور کرایا کہ چھاتی کے کینسر کے مریض کے ذہنی مسائل سے نمٹنے کے لئے کس طرح علاج سے پہلے اور بعد میں کئیر کرنا ہوگا۔  انہوں نے کہا کہ ابتدائی مرحلے میں وہ گھر میں ہی  اس بیماری کا پتہ لگاسکتے ہیں۔  بعد میں شرکاء کی طرف سے اس بیماری سے متعلق سوالات و جوابات کا سیشن ہوا. وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر جہان بخت نے ڈاکٹر صفورہ شاہد، ایڈیشنل ڈپٹی ڈائریکٹر، سٹوڈنٹس کونسلنگ پلیسمینٹ ڈاکٹر انور شاد اور پاسٹک پشاور کے ڈپٹی ڈائریکٹر غزالہ علی خان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ چھاتی کینسر ایک جان لیوا بیماری ہے، انہوں نے کہا کہ ہم اسلام کے اصولوں کے مطابق سادہ زندگی اپناکر اس قسم کے امراض سے اپنے آپ کو محفوظ بنا سکتے ہیں، انہوں نے کہا کہ خواتین کا نہ صرف صحت بلکہ معاشرے کے دوسرے امور میں بھی فعال کردار ادا کرنا بہت اہمیت کا حامل ہے. انہوں نے کہا کہ اسلام اور آئین پاکستان میں خواتین کی جو حقوق ہیں، ہم انہیں دیں، تو وہ ملک و قوم کی ترقی و فلاح میں اہم کردار ادا کر سکتی ہے. انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت خواتین کی حقوقِ پر توجہ دیں رہی ہے اور اسے بروئے کار لاتے ہوئے انہیں معاشرے میں اہم مقام دینا چاہتی ہے. انہوں نے ان سرگرمیوں کو حقیقت میں لانے اور آئندہ بھی اس طرح کے آگاہی سیمنارز منعقد کرنے پر زور دیا.

مزید : پشاورصفحہ آخر