نواز شریف کو سروسز ہسپتال سے شریف میڈیکل سٹی کی بجائے گھر پر کیوں منتقل کیا گیا؟ بالآخر اصل وجہ سامنے آگئی

نواز شریف کو سروسز ہسپتال سے شریف میڈیکل سٹی کی بجائے گھر پر کیوں منتقل کیا ...
نواز شریف کو سروسز ہسپتال سے شریف میڈیکل سٹی کی بجائے گھر پر کیوں منتقل کیا گیا؟ بالآخر اصل وجہ سامنے آگئی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان خان نے کہا ہے کہ ہسپتال میں انفیکشن کی وجہ سے نواز شریف کے نظام مدافعت کو خطرہ تھا جس کے باعث انہیں ہسپتال کی بجائے ویسی ہی سہولیات کے ساتھ گھر پر رکھا گیا ہے۔

ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں نواز شریف کے ذاتی معالج نے کہا کہ وہ لوگ جو سنگدلانہ طور پر سابق وزیر اعظم نواز شریف کے ہسپتال میں نہ رہنے پر تنقید کر رہے ہیں انہیں یہ جان لینا چاہیے کہ انہیں سٹیرائڈز کی ہائی ڈوز دی گئی ہے، انہیں ہسپتال میں رہنے سے اس لیے روکا گیا ہے کیونکہ وہاں انفیکشن ہوسکتا ہے جو ان کے نظام مدافعت کیلئے جان لیوا ثابت ہوگا۔

ڈاکٹر عدنان خان کے مطابق ڈاکٹرز نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے حوالے سے ہدایت کی تھی کہ انہیں تنہائی میں ہائی ڈپینڈینسی یونٹ کی سہولیات کے ساتھ رکھا جائے، شریف میڈیکل سٹی نے نواز شریف کو گھر پر ہی وہ تمام سہولیات مہیا کیں جو ان کیلئے ضروری تھیں۔ نواز شریف کو گھر پر ہی میڈیکل بورڈ کی زیر نگرانی ڈاکٹرز اور نرسز مسلسل علاج کی سہولت فراہم کر رہے ہیں۔

مزید : قومی