عیسائی راہبہ مذہبی تعلیم چھوڑ کر فحش فلموں کی اداکارہ بن گئی

عیسائی راہبہ مذہبی تعلیم چھوڑ کر فحش فلموں کی اداکارہ بن گئی
عیسائی راہبہ مذہبی تعلیم چھوڑ کر فحش فلموں کی اداکارہ بن گئی

  



بوگوٹا (ڈیلی پاکستان آن لائن) کولمبیا سے تعلق رکھنے والی فحش فلموں کی اداکارہ یوڈی پنیدا کا کہنا ہے وہ عیسائی راہبہ بننے کی تعلیم حاصل کر رہی تھیں لیکن پھر انہوں نے اچانک مذہب کو چھوڑ کر فحش فلموں میں اداکاری شروع کردی۔ آج یوڈی پنیدا کولمبیا کی سب سے مشہور پورن سٹار بن چکی ہیں۔

اپنے ایک انٹرویو کے دوران یوڈی پنیدا نے بتایا کہ جب وہ 10 سال کی تھیں تو انہیں احساس ہوا کہ انہیں خدا کیلئے اپنی زندگی کو وقف کرنا ہے، اس کے بعد انہوں نے مذہبی تعلیم حاصل کرنا شروع کردی تاکہ وہ راہبہ بن سکیں۔ اگلے 8 برس انہوں نے مذہبی تعلیم حاصل کی اور اس دوران اپنے مذہبی استاد کی محبت میں مبتلا ہوگئیں۔

اداکارہ نے بتایا کہ جب انہیں اپنے استاد سے محبت ہوئی تو انہیں احساس ہوا کہ ان کیلئے یہ شعبہ موزوں نہیں ہے اس لیے انہوں نے راہبہ کی تعلیم چھوڑ دی۔ ’اسی دوران میری ملاقات جوان بسٹوس نامی آدمی سے ہوئی جو خوبصورت لڑکیوں کو اپنی فحش فلموں کیلئے کاسٹ کر رہا تھا، میں نے اپنے پادری کے فیصلے کے برخلاف اس کام کیلئے آڈیشن دیا اور منتخب ہوگئی۔‘

یوڈی پنیدا نے بتایا کہ شروع میں انہیں برا بھی لگا لیکن اب وہ اپنے کیریئر سے خوش ہیں۔ ’ مجھے تب بھی خوشی ملتی ہے جب میں چرچ میں جاتی ہوں، میں جمعہ کی دعائیہ تقریب ، ہفتہ کی میٹنگ یا اتوار کی تقریب میں باقاعدگی کے ساتھ شرکت کرتی ہوں۔‘

مزید : ڈیلی بائیٹس